اسلام آباد(نمائندہ خصوصی )ملک کی سب سے بڑی اور منفرد فارن کرنسی ایکچینج کمپنی اے اے کے چیف ایگزیکٹو آفیسر مسعود اختر نے کہا ہے کہ ہم بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی حق حلال اور خون پسینے کی کمائی انکے اہل خانہ تک ایمانداری اور زمہ داری کے ساتھ پہنچانے کو اپنا فرض عین سمجھتے ہیں، یہ کاروبار بھی ہے اور عین عبادت بھی،اسی نصب العین کو مدنظر رکھتے ہوئے ہم نے اپنے کام کے اوقات کو رمضان المبارک میں بھی عام ایام کی طرح رکھا ہے تاکہ ہر خاص وعام بغیر کسی تکلیف کے فائدہ اٹھا سکے ، 92 نیوز کے ساتھ خصوصی گفتگو میں پاکستان کی سب سے بڑی اور منفرد ایکسچینج کمپنی اے اے کے سی ای او مسعود اختر نے کہا کہ پاکستان کی ایکسچینج کمپنیاں سیلز کلچر کو اپنائے ہوئے تھیں ہم نے اس کو تبدیل کیا ہے ہماری کمپنی نے کارپوریٹکلچر کو فروغ دیا ہے تاکہ ہمارے ڈیسک پر آنیوالے افراد کو بہترین سہولیات ملیں اور خوش اخلاق عملہ کے زریعے انکو سروسز کی فراہمی یقینی بنائی جاسکے ، مسعود اختر نے کہا کہ اے اے ایکسچینج اس لحاظ سے مفرد کمپنی کے کیونکہ صرف ہمارے پاس پاکستان میں تین پراڈکٹ موجود ہیں جن میں ریا، ویسٹرن یونین، اورمنی گرام شامل ہیں،یہ تینوںسہولتیں پاکستان کی کسی اور فارن ایکسچینج کمپنی کے نیٹ ورک پر ایک چھت کے نیچے دستیاب نہیں ہیں،ایک سوال کے جواب میں سی ای او اے اے کمپنی مسعود اختر نے بتایا کہ اسٹیٹ بنک کے تعاون سے کام کو مزید بڑھا رہے ہیں، اسٹیٹ بینک آف پاکستان ہمیں سہولت فراہم کررہا ہے ، ہمیں ٹریننگ فراہم کرتا ہے ، گائیڈ لائن دیتا ہے ، سعودی عرب، برطانیہ ، امریکہ، فرانس، گلف ممالک، دوبئی، یو اے ای ، کینیڈا سے ہمیں روزانہ ترسیلات زر موصول ہوتی ہیں جنہیں ہم اپنے کسٹمرز تک پہنچانا اپنی زمہ داری سمجھتے ہیں ، انکا مزید کہنا تھا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانیز صرف پیسے ہی نہیںبھجوارہے بلکہ ملک کی تعمیر وترقی میںاپنا بھرپور حصہ بھی ڈال رہے ہیں، مسعود اختر نے بتایا کہ انکی کمپنی کے پاس رقوما ت بھیجنے ، وصول کرنے ، کرنسی ایکسچینج، ٹیلی گراف ٹرانسفر، ڈیمانڈ ڈرافٹ، فارن کرنسی ایکچسینج کی سہولیا ت موجود ہیں اور ہمارے 100سے زائد نیٹ ورک موجود ہیں۔