کراچی/لاڑکانہ (سٹاف رپورٹر، بیورو رپورٹ) میڈیا سیل بلاول ہاؤس نے پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی سکیورٹی کے متعلق میڈیا کے ایک حصے میں نشر ہونے والی رپورٹ کو بے بنیاد ،متعصبانہ اور مبالغہ آرائی پر مبنی قراردیا ہے ، جس میں کہا گیا ہے کہ بلاول کی لاڑکانہ میں ریٹرننگ افسر آفس میں آمد کے موقع پر 400 اہلکار تعینات کئے گئے تھے ۔اپنے ردعمل میں میڈیا سیل بلاول ہائوس نے کہا کہ میڈیا کا ایک حصہ حقائق و سچائی کو مسخ کرکے مخالفین کی ایما پر پراپیگنڈہ کررہاہے ۔بیان میں کہا گیا کہ بلاول کی سکیورٹی سمجھوتہ کرنے کے لیے نگران حکومت پردباوَ ڈالا جا رہا ہے ۔ 2007ئمیں بھی شہید محترمہ بینظیر بھٹو کی سکیورٹی پرکمپرومائز کیا گیا تھا۔بلاول بھٹو زرداری ملک کی سب سے بڑی پارٹی اور عوام کے مقبول ترین لیڈر ہیں، ان کی حفاظت حکومتِ وقت کی ذمے داری ہے ۔ پیپلز پارٹی کے سیکرٹری اطلاعات سینیٹر مولابخش چانڈیو نے کہا کہ بلاول بھٹو کی سکیورٹی سے متعلق مخصوص ایجنڈے کے تحت واویلا کیاجارہا ہے ، ان کی سکیورٹی پرکمپرومائزنہیں کریں گے ۔ نگران حکومت خبروں پر کان دھرے بغیر بلاول کو فول پروف سکیورٹی فراہم کرے ۔سابق چیئرمین سینٹ نیئر بخاری نے کہا کہ سازش کے تحت بلاول بھٹو کی سکیورٹی پرشورمچایاجارہاہے جبکہ بلاول بھٹو کی حفاظت ریاست کی ذمے داری ہے ، ہم بلاول کی سکیورٹی پرکوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے ۔لاڑکانہ کی یونین کمیٹی 2اور4میں خطاب کرتے ہوئے پیپلزپارٹی سندھ کے صدر نثاراحمد کھوڑو نے کہا کہ مخصوص ایجنڈے کے تحت بلاول بھٹو کی سکیورٹی پرشورمچایا جارہاہے ،ماضی میں بینظیربھٹو کو سکیورٹی نہ دیکرشہید کرایا گیا تھا لیکن بلاول کی سکیورٹی پرکوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا۔