اسلام آباد(خصوصی نیوز رپورٹر) پاکستان اکانومی واچ کے صدر ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے کہا ہے کہ بھارت کو افغانستان تک زمینی رسائی ہرگز نہ دی جائے ،گزشتہ روز اپنے بیان میں ڈاکٹر مرتضی مغل نے کہا کہ ایران پر امریکی کی نئی پابندیوں سے اس خطے اور افغانستان پر اجارہ داری کا بھارتی خواب چکنا چور ہو گیا ہے ۔ امریکی پابندیوں سے ایران کی بندرگاہ چاہ بہار کا مستقبل غیر یقینی ہو گیا ہے جبکہ اسی بندرگاہ اورافغانستان میں اربوں ڈالر کی بھارتی سرمایہ کاری بھی ضائع ہو گئی ہے ۔ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے کہا کہ بھارت اب افغانستان کو اپنی مرضی کے مطابق پاکستان کے خلاف استعمال نہیں کر سکے گا۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان کے مابین کشیدگی کی وجہ سے افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کا بڑا حصہ ایران منتقل ہو گیا تھا جس سے پاکستان کا اثر رسوخ متاثر ہو رہا تھا جبکہ بھارت کی پوزیشن مستحکم ہو رہی تھی مگر اب صورتحال بدک گئی ہے اور افغانستان کا دارومدار پاکستانی بندرگاہ پر دوبارہ بڑھ گیا ہے ۔ادھر بھارت جس ایرانی بندرگاہ کو سی پیک کے متبادل کے طور پر پیش کر رہا تھا مگراس کا اپنا کوئی مستقبل نہیں رہا ہے جس سے نئی دہلی میں پالیسی سازوں کی نیند حرام ہو گئی ہے ۔