اسلام آباد( خبر نگار خصوصی) نمائندہ خصوصی برائے مذہبی ہم آہنگی علامہ طاہر اشرفی نے کہا ہے کہ گزشتہ سال کی طرح اس سال بھی رمضان المبارک میں ایس او پیز کے تحت مساجد کھلی رہیں گی۔ مساجد اور امام بارگاہیں بندکرنے کی افواہیں بے بنیاد ہیں۔نمازیوں سے اپیل ہے کہ گھر سے وضو کرکے آئیں۔میڈیا سے گفتگو میں طاہر اشرفی نے کہاکہ عوام سے اپیل ہے کہ کورونا کی تیسری لہر شدید ہے ،اس سے زیادہ سے زیادہ بچا جائے ۔ اگر ذخیرہ اندوز باز نہیں آئیں گے تو حکومت ذخیرہ اندوزوں کے خلاف شدید ایکشن کرے گی۔تاجر تنظیموں کو آگے بڑھ کر اپنے نفع کو آدھا کر دینا چاہیے ۔عمران خان کی حکومت میں مسجد اور مدرسے پہلے سے زیادہ مضبوط ہوئے ہیں۔علماء کے ساتھ مل کر وقف املاک ایکٹ کے معاملات کی بھی اصلاح کی جائے گی ۔فحاشی کے بارے میں عمران خان کے بیان کو لوگوں نے غلط رنگ دیا۔اگر کوئی مرد بھی فحاشی پھیلاتا ہے تو وہ اتنا ہی گناہ گار ہے جتنی عورت۔آج کل سائیکل بھی بیچنی ہو تو عورت کو اشتہار میں دکھایا جاتا ہے ، طاہر اشرفی نے کہاکہ عمران خان کو بحرین کویت اور سعودیہ عرب نے دورے کی دعوت دی ہے ۔عراق کی دفاعی نمائش میں پاکستان کا سٹال بھی لگا ہوا تھا۔عمران خان نے ختم نبوت اور ناموس رسالت کا مقدمہ اقوام متحدہ میں اٹھایا،او آئی سی نے پہلا ایوارڈ ایک پاکستانی مدرسے کے طالبعلم کو دیا۔ حکومت کسی مسجد کے ساتھ کوئی زبردستی نہیں کرے گی۔ویکسین لگوانی چاہیے اور روزے کی حالت میں بھی لگائی جا سکتی ہے ۔