لاہور(نامہ نگار خصوصی ) سپریم کورٹ نے قانون کی طالبہ خدیجہ صدیقی پر حملے کے مقدمے کے ملزم کی بریت کیخلاف اپیل کو باقاعدہ سماعت کیلئے منظور کرلیا اور ملزم شاہ حسین کو ایک لاکھ روپے مچلکے جمع کرانے کی ہدایت کی۔ سپریم کورٹ کے سینئر ترین جج جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے خدیجہ صدیقی کی اپیل پر سماعت کی۔سماعت کے دوران خدیجہ صدیقی اور شاہ حسین اپنے اپنے وکلا کے ساتھ پیش ہوئے ۔بنچ کے جسٹس آصف سعید کھوسہ نے استفسار کیا کہ کیا وجہ تھی کہ خدیجہ صدیقی اور اس کی چھوٹی بہن نے پوری دنیا چھوڑ کر شاہ حسین پر الزام لگایا۔ بنچ کے استفسار پر بتایا گیا ہے خدیجہ صدیقی اور شاہ حسین دونوں ہی قانون کے طالبعلم ہیں۔ جسٹس آصف سعید کھوسہ نے نشاندہی کی کہ وقوعہ دن کے وقت ہوا، رات ہوتی تو شک کی گنجائش باقی تھی۔سپریم کورٹ کے دو رکنی بنچ نے ابتدائی سماعت کے بعد اپیل باقاعدہ سماعت کیلئے منظور کر لی اور قرار دیا کہ اپیل پر مزید کارروائی موسم گرما کی تعطیلات بعد ہوگی۔