اسلام آباد،صنعاء (وقائع نگار،سپیشل رپورٹر، این این آئی )عرب اتحادنے یمن میں دو ہفتے کیلئے جنگ بندی کا اعلان کر دیا ۔ امریکہ نے کہا ہے کہ حوثیوں کو دہشتگرد قراردینے پرغور کر رہے ہیں ،پاکستان اور مصر نے سعودیہ پر حوثیوں کے حملوں کی مذمت کی ہے ،دفتر خارجہ پاکستان نے کہا ہے کہ سعودی عرب کے ساتھ یکجہتی اور اپنی مکمل حمایت کا اعادہ کرتے ہیں،دفتر خارجہ پاکستان نے کہا کہ اس حملے سے ایندھن کے ٹینک میں آگ بھڑک اٹھی، جسے بغیر کسی جانی نقصان کے کامیابی کے ساتھ بجھایا گیا،حملہ سعودی عرب کی خودمختاری کے خلاف کارروائی ہے ،جس سے بے گناہ شہریوں کے جانوں کو خطرات لاحق ہیں۔ سعودی عرب کے نائب وزیر دفاع شہزادہ خالد بن سلمان نے کہاکہ جنگ بندی حوثیوں کے لیے ایک موقع ہے کہ وہ یہ بات ثابت کریں کہ وہ ایران کے ہاتھوں میں استعمال ہونے والا کوئی آلہ کار نہیں۔عرب ٹی وی کے مطابق عرب اتحادی فوج کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے بتایا کہ کورونا کے پیش نظر یمن میں جنگ بندی دو ہفتے کے لیے نافذ کردی گئی ہے ،جنگ بندی میں حالات کے پیش نظر توسیع کی جا سکتی ہے ، انسانیت کے لیے امدادی مشن جنگ اور فوجی کارروائیوں پر مقدم ہے ۔ جدہ میں ایندھن سٹیشن پر بزدلانہ دہشت گرد حملے میں حوثی ملیشیا ملوث ہے ،آگ پر قابو پا لیا گیا ہے ۔امریکی قومی سلامتی کے مشیر رابرٹ او برائن نے دورہ فلپائن کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو میں کہا کہ حوثی ملیشیا سے نمٹنے کے لیے تمام آپشن کھلے ہیں، واشنگٹن حوثیوں کو مستقل بنیادوں پر دہشت گرد تنظیم قرار دینے پرغور کر رہا ہے ۔مصر نے جدہ کے شمال میں پٹرولیم مصنوعات کی تقسیم کے سٹیشن پر ہونے والے دہشت گرد حملے کی مذمت کی ہے ۔