لاہور(جنرل رپورٹر)سرکاری ہسپتالوں کے سٹاف کی جانب سے مریضوں کے علاج معالجہ سے حاصل ہونیوالی آمدن سے شیئر کی غیرمنصفانہ تقسیم کی چیف جسٹس آف پاکستان کو شکایات کے بعد محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کئیر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن کو بھی ہوش آگیا ۔ تمام ٹیچنگ ہسپتالوں کو ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ وہ تمام اہل عملے کو اس شیئر کی تقسیم کو یقینی بنائیں اور 9جولائی تک رپورٹ محکمہ کو پیش کی جائے ۔ ذرائع کے مطابق چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار نے جناح ہسپتال کا دورہ کیا تو اس دوارن وہاں کے پیرا میڈیکل سٹاف نے شکایت کی حکومت کی پالیسی کے مطابق یہاں پر اکثر پیرا میڈیکل سٹا ف کو شیئر نہیں دیا جا رہا اور ان کی حق تلفی کی جا رہی ہے ۔شیئر سسٹم کے مطابق کمائی میں سے حکومت کو 45فیصد، ڈاکٹروں کو 35فیصد اور نرسز و پیرا میڈیکل سٹاف کو 20فیصد شئیردیا جاتا ہے ۔چیف جسٹس آف پاکستان کے نوٹس میں معاملہ آنے کے بعد اب محکمہ پیشلائزڈ ہیلتھ کئیر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن نے بھی پھرتیاں دیکھانا شروع کر دی ہیں اور تمام ٹیچنگ ہسپتالوں کو ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ وہ اس شئیر کی تقسیم پر عمل درآمد کو لازمی بنائی اور اس حوالے سے ایک عمل درآمدی رپورٹ بھی جمع کروائی جائے ۔