بیروت،کوالا لمپور(نیٹ نیوز،صبا ح نیوز) لبنانی فوج نے کورونا وائرس کی جان لیوا وبا کے پیش نظر پورے ملک کا کنٹرول سنبھالتے ہوئے ایمرجنسی کا نافذ کردیا۔لبنانی نیوز ایجنسی کے مطابق ملک میں کورونا کی وبا بے قابو ہونے اور بڑھتے ہوئے کیسز کے باعث مسلح افواج کی اعلیٰ کونسل نے صدر کی خصوصی اجازت سے ایمرجنسی نافذ کرنیکا اعلان کیا ۔ لبنانی افواج کا کہنا ہے کہ کابینہ کی سفارشات پر عمل کرتے ہوئے صدر نے ملک کا کنٹرول فوج کے حوالے کرنے کی منظوری دی ۔ افواج کی اعلیٰ کونسل نے اعلامیہ میں کہا کہ ملک بھر میں جمعرات 14 جنوری کو صبح 6 بجے سے پیر 25 جنوری تک مکمل کرفیو ہوگا۔تمام ہسپتالوں پر لازم ہے کہ وہ کورونا کے مریضوں کا علاج کریں، ان ہسپتالوں کیخلاف سخت کارروائی کی جائیگی جہاں پر کورونا وائرس میں مبتلا مریض کو داخلہ نہیں ملے گا۔ علاوہ ازیں ملک بھر کے ہوائی اڈوں میں پروازوں کی شرح کم کرکے 20 فیصد کردی جائیگی۔ لبنان میں آنیوالے غیر ملکی مسافر ہوٹل میں7 دن تک خود کو محدود رکھیں گے جبکہ شہری اپنے گھروں میں خود کو قرنطینہ کرینگے ۔ ملک بھر میں تمام پبلک مقامات بند اور ہر طرح کی تقریبات اور میل جول کے علاوہ تجارتی سرگرمیاں معطل رکھی جائینگی۔ تمام شہری کرفیو کی مکمل پابندی کریں، انتہائی ناگزیر حالات کے علاوہ گھر سے باہر نہ نکلیں۔ادھرملائیشیا میں بھی ایمرجنسی نافذکرکے پارلیمان کو اگست تک معطل کردیاگیا۔ ملائیشیا کے بادشاہ سلطان عبداﷲ سلطان احمد شاہ کی طرف سے اس فیصلے کی توثیق کے بعد ٹی وی پر قوم سے خطاب میں وزیراعظم محی الدین یاسین نے کہا کہ یہ اقدام کورونا کی بگڑتی صورتحال پر کیا گیا ۔ فوج نے حکومت کا تختہ الٹا نہ ملک میں کرفیو نافذ کیا جا رہا ۔ دوران ایمرجنسی اقتدار سول حکومت کے ہاتھ میں ہی رہیگا۔مبصرین کے مطابق کورونا کو جواز بتا کر ہنگامی حالات نافذ کرنے کے سیاسی محرکات ہیں، اس دوران عام انتخابات نہیں کرائے جا سکیں گے ۔ اس فیصلے سے وزیراعظم محی الدین یاسین کی کمزور حکومت کو عارضی استحکام ملے گا۔آج سے سب سے بڑے شہر کوالالمپور اور سرکاری دارالحکومت پتراجایا سمیت پانچ ریاستوں میں دو ہفتوں کیلئے لاک ڈائون جیسی پابندیاں نافذ کی جارہی ہیں۔