ملتان ،حافظ آباد،منڈی عثمان والا( نمائندگان) ملتان ،رحیم یارخان ودیگر علاقوں میں طوفان بادوباراں کے باعث نظام زندگی معطل ہوکر رہ گیا ۔وہواکے سینکڑوں قصبات کا زمینی رابطہ منقطع اوربجلی کا نظام درہم برہم ہوگیا۔آسمانی بجلی فیکٹری کی چھت گرنے سے دوافراد جاں بحق ہوگئے ۔حافظ آباد،منڈی عثمان والا ودیگر علاقوں میں لوڈشیڈنگ کا سلسلہ بھی جاری ہے ۔میپکو ریجن میں ہفتہ اور اتوار کی درمیانی شب آنے والے طوفان سے متاثرہ بجلی کے نظام کو بحال کر دیا گیا تاہم انفرادی شکایات کا مکمل ازالہ نہیں کیا جا سکا کھمبے ،درخت ،کنڈکٹر اور تاریں گرنے سے بجلی کی فراہمی بری طرح سے متاثر ہوئی میپکو نے بجلی کی فراہمی بحال کر دی فیڈرز،ڈسٹری بیوشن ٹرانسفارمرز اور انفرادی شکایات کی بحالی میں کئی گھنٹے لگ گئے ۔ ملتان میں شالامار کالونی کے رہائشی رانا ثاقب نے سیداں والا بائی پاس کے قریب پلاسٹک فیکٹری بنائی ہوئی ہے رات کے وقت بارش کی وجہ سے فیکٹری کی چھت گرگئی جس سے فیکٹری کا ملازم عبدالرشید جاں بحق ہو گیا ۔رحیم یارخان میں تیزآندھی اوربارش کے باعث بستی غلام بنی گوپانگ موضع کوٹلہ موہانہ میں بجلی کے تین پول گرگئے ۔ گوراں تھل روڈو میں آسمانی بجلی گرنے سے حافظ غفور قیصرانی جاں بحق ہوگیا جبکہ دو بکریاں بھی ہلاک ہوگئیں ۔ادھر حافظ آباد ،منڈی عثمان والا اور اسکے گردونواح میں واپڈا کی جانب سے بجلی کی غیرعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ اب بھی جاری ہے ۔ دن اور رات کے دوران بجلی کی کئی کئی گھنٹے بندش سے شہریوں کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ ایس ڈی او فیڈر عثما ن والا نے کہا کہ کمال ہے انسان مرجائے تو لوگ برداشت کرتے ہیں مگر لوڈ شیڈنگ نہیں ۔