اسلام آباد،راولپنڈی،لاہور (وقائع نگار خصوصی، اپنے رپورٹر سے ،اپنے نیوزرپورٹرسے ،اپنے نامہ نگار سے ،کامرس رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں) ملک بھر سے 21ہزار 482 امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے ۔قومی اسمبلی کی جنرل نشستوں کیلئے 5ہزار 473صوبائی اسمبلیوں کی جنرل نشستوں کیلئے 13ہزار 693کاغذات نامزدگی موصول ہوئے ۔الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری تفصیلات کے مطابق بلوچستان اسمبلی کیلئے 1400،کے پی اسمبلی کیلئے 1920 کاغذات نامزدگی جمع ہوئے ۔ پنجاب اسمبلی کیلئے 6ہزار ،سندھ اسمبلی کیلئے 3 ہزار 626امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے ۔قومی اسمبلی میں خواتین کی مخصوص نشستوں کیلئے 436صوبائی اسمبلیوں میں خواتین کی مخصوص نشستوں کیلئے ایک ہزار 255 کاغذات موصول ہوئے ۔ قومی اسمبلی میں اقلیتوں کی مخصوص نشستوں کیلئے 154،جبکہ صوبائی اسمبلیوں میں اقلیتی مخصوص نشستوں کیلئے 471کاغذات نامزدگی موصول ہوئے ۔ الیکشن کمیشن نے رات بھر امیدواروں کی ڈیٹاانٹری کا عمل جاری رکھا اور منگل کی صبح 5 بجے اس کی تکمیل کی۔دوسری جانب عام انتخابات کیلئے امیدواروں کی کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کا عمل جاری ہے ،اب تک ایف بی آر نے 9ہزار 595،نیب نے 10ہزار 268اور اسٹیٹ بینک نے 9ہزار908امیدواروں کے کاغذات نامزدگی کی سکروٹنی رپورٹ الیکشن کمیشن کو بھجوا دی ۔ذرائع کے مطابق ایف بی آر نے خیبر پختونخوا کے 1770 سندھ کے 2527 کاغذات نامزدگی کی سکروٹنی رپورٹ الیکشن کمیشن کو بھجوا دی،ایف بی آر کی جانب سے فاٹا کے 187 اقلیتوں کے 186 اور اسلام آباد 55 امیداروں کی رپورٹ الیکشن کمیشن کو بھجوا دی گئی جبکہ پنجاب کے 3940 بلوچستان کے 930 کاغذات نامزدگی کی سکروٹنی رپورٹ الیکشن کمیشن کو بھجوائی گئی ،ایف بی آر کے پاس 9 ہزار 4 سو 13 امیداروں کے کاغذات نامزدگی کی رپورٹ باقی ہے ۔ ذرائع کے مطابق نیب نے خیبر پختونخوا کے 1832 سندھ کے 2674 اور فاٹا کے 214 امیداروں کی سکروٹنی رپورٹ الیکشن کمیشن کو بھجوائی،نیب کی جانب سے پنجاب کے 4299 اقلیتوں کے 214 ،اسلام آباد کے 63 بلوچستان کے 972 امیداروں کی سکروٹنی رپورٹ الیکشن کمیشن کو بھجوائی گئی ۔نیب کے پاس 8740 امیداروں کے کاغذات کی رپورٹ آنا باقی ہے ۔ ذرائع کے مطابق سٹیٹ بنک نے خیبر پختونخوا کے 1736،پنجاب کے 4ہزار 62 سندھ کے 2 ہزار 6 سو 44 امیداروں کے کاغذات کی رپورٹ الیکشن کمیشن کو بھجوا دی۔سٹیٹ بینک کی جانب سے فاٹا کے 214 اقلیتوں کے 215، اسلام آباد کے 64 اور بلوچستان کے 973 امیداروں کی رپورٹ الیکشن کمیشن کو بھجوائی گئی ۔سٹیٹ بنک کی جانب سے 9 ہزار 1 سو امیداروں کی سکروٹنی رپورٹ آنا باقی ہے ۔ ادھرپی ٹی سی ایل کی جانب سے الیکشن کمیشن کو نادہندہ امیدواروں کی تفصیلات بھیج دی ہیں جس کے مطابق 1514امیدوار نا دہندہ نکلے ہیں۔فہرست کے مطابق پی ٹی سی ایل کے نادہندگان میں مراد سعید ، فیصل کریم کنڈی ، میاں منظور وٹو ، سید ظفر علی شاہ ،رانا مشہود ،حنیف عباسی، عبدالقادر گیلانی ،علیم خان،یاسمین راشد ،فرید پراچہ، انعام اﷲ نیازی،رانا تنویر حسین ، رانا افضال حسین اور ظفر اﷲ جمالی نادہندگان میں شامل ہیںجو3 ماہ سے 5سال تک بلوں کے نادہندگان ہیں ۔ادھر این اے 131 سے معروف گلوکار جواد احمد کے کاغذات نامزدگی جانچ پڑتال کے بعد کلیئر قرار دیدئیے گئے ہیں ۔ جنوبی پنجاب صوبہ محاذ کے صدر اور حلقہ این اے 177 اور پی پی259 سے عام انتخابات میں حصہ لینے والے مخدوم خسروبختیار کے کاغذات نامزدگی پر اعتراضات داخل، آج دوبارہ ریٹرننگ افسر کے سامنے پیش ہونگے ۔ راولپنڈی سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 60 سے روایتی حریفوں شیخ رشید اور حنیف عباسی کے کاغذات نامزدگی منظور کرلئے گئے ۔ سابق وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان کے کاغذات نامزدگیکیخلاف آراو نے شاہد اورکزئی کی درخواست منظور کرتے ہوئے چودھری نثار اور اعتراض کنندہ کوکل 14 جون کو طلب کرلیا۔درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ چودھری نثار سپریم کورٹ حملہ کیس میں ملوث ہیں اس لئے انہیں الیکشن لڑنے کی اجازت نہ دی جائے ۔ چیئرمین پاک سر زمین پارٹی سید مصطفیٰ کمال کے این اے 253 نیو کراچی، این اے 247 ڈیفنس کلفٹن ، پی ایس 124 نیو کراچی اور پی ایس 127 لیاقت آباد سے کاغذات نامزدگی منظور ہوگئے ہیں ۔ دوسری جانب سکروٹنی کیلئے شہبازشریف، مریم نواز اور حمزہ شہباز آج ایوان عدل اور سیشن کورٹ میں پیش ہونگے ۔ریٹرنگ افسر نے ڈاکٹر یاسمین راشد ، افضل کھوکھر اورسیف الملوک کھوکھر کو بھی طلب کررکھا ہے ۔لاہور میں قومی اسمبلی کی14نشستوں کیلئے 304 امیدواروں میں سے پہلے روز 50 سے زائد جانچ پڑتال کیلئے ریٹرنگ افسران کے رو برو پیش ہوئے ۔زعیم قادری،لیاقت بلوچ،خواجہ احمد حسان،عظمی کادار،روحیل اصغر،اشرف جلالی ، جواد احمد اور دیگر کے کاغذات نامزدگی منظور کر لئے گئے جبکہ7 امیدواروں کے وکلاء نے عدم پیروی کے باعث اگلی تاریخیں لے لی۔مائزہ حمید،خلیل طاہر سندھو،رمیش سنگھ اروڑہ سمیت مخصوص نشستوں پر 70سے زائد امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کرلئے گئے ۔پنجاب اسمبلی میں غیر مسلموں کی مخصوص نشستوں کے حوالے سے مسلم لیگ ن کے 8غیر مسلم امیدوارسکروٹنی کیلئے آج پیش ہوں گے ۔دریں اثناء ریٹرننگ افسر نے کراچی کے حلقے این اے 243 سے چیئرمین پی ٹی آئی کے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کاعمل19جون تک موخرکردیاہے ۔عمران خان کے خلاف عبدالوہاب بلوچ ایڈووکیٹ نے سیتاوائٹ سے اپنی بیٹی کوتسلیم نہ کرنے پر درخواست دائر کی ہے ۔ گزشتہ روزعمران خان کے نمائندے عمران اسماعیل سے عدالت نے استفسار کیا کہ آپ کو کیس کی کاپی مل گئی؟اس پرعمران کے وکلاء نے کہا کہ کاپی مل گئی ہے ،جرح کیلئے وقت دیاجائے ۔عدالت نے کہا کہ یہ جوڈیشل کیس نہیں،ہم الیکشن کمیشن کے رول فالوکررہے ہیں،اس درخواست کافیصلہ بھی 19جون کوہی کیاجائیگا۔