اسلام آباد (نمائندہ خصوصی، اے پی پی) نگران وزیراعظم جسٹس (ر) ناصرالملک نے حج آپریشنز کو احسن انداز میں یقینی بنانے کیلئے وزارت مذہبی امورکے ابتک کئے جانیوالے اقدامات پر اطمینان کااظہار کرتے ہوئے ہدایت کی ہے کہ عمررسیدہ اورمعذور عازمین پر خصوصی توجہ دی جائے اورایسے عازمین کو زیادہ سے زیادہ سہولیات کی فراہمی کویقینی بنایاجائے ۔ بدھ کوجاری بیان کے مطابق وزیراعظم جسٹس (ر) ناصرالملک کو وزارت مذہبی امور کے طریقہ ہائے کار بالخصوص حج آپریشنز2018ء کے بارے میں خصوصی بریفنگ دی گئی۔ سیکرٹری نے اجلاس کو حج آپریشنز 2018ء کو احسن انداز میں آگے بڑھانے سے متعلق تیاریوں کے بارے میں بھی آگاہ کیا۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ رواں سال سرکاری حج سکیم کے تحت 3 لاکھ 74ہزار857 درخواستیں وصول ہوئیں جو حکومتی انتظام میں حج آپریشنز پرعوام کے اعتماد کا مظہرہے ۔ وزیراعظم کو بتایاگیا کہ رواں سال 80 برس سے زائد عمر کے افراد اوران کے ساتھ ساتھ صحتمند معاون کیلئے ایک ہزارسیٹیں مختص کی گئی ہیں۔ اسی طرح گزشتہ تین سال یا اس سے زائد قرعہ اندازی میں ناکام ہونے والے 12ہزار235 درخواست گزاروں کو حج کیلئے کامیاب قرار دیا گیاہے ۔ وزیراعظم کو عازمین حج کو حج سے قبل تربیت کی فراہمی، نقل وحمل اورعازمین کیلئے رہائشی اوردیگر سہولیات کی فراہمی بارے بھی آگاہ کیا گیا۔ وزیراعظم نے ہدایت کی کہ عمررسیدہ اورمعذور عازمین پر خصوصی توجہ دی جائے اورایسے عازمین کو زیادہ سے زیادہ سہولیات کی فراہمی کویقینی بنایاجائے ۔ دریں اثنانگران وزیراعظم جسٹس(ر)ناصر الملک سے جاپان کے سفیر تاکاشی کورائی نے ملاقات کی۔ تاکاشی کورائی نے کہا کہ جاپان پاکستان کیساتھ تعلقات کو انتہائی اہمیت دیتا ہے ، دہشتگردی کے خاتمہ میں حکومت اور عوام کی کوششوں کی قدر کرتے ہیں۔ نگران وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان میں سکیورٹی کی صورتحال کے بارے میں تاثر کو تبدیل ہونا چاہئے ۔