نئی دہلی (نیٹ نیوز) بھارت نے پاکستان میں ’’آزاد جموں و کشمیر عبوری آئین ایکٹ 2018 ‘‘ میں ترمیم کیخلاف ہرزہ سرائی کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان آزاد کشمیر خالی کردے ۔ آزاد کشمیر کے آئین میں 13 ویں ترمیم پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے بھارتی حکومت نے ایک بار پھر پرانا راگ الاپتے ہوئے پورے کشمیر کو اپنا اٹوٹ انگ قرار دیا ہے ۔ بھارتی وزارت خارجہ نے اپنے جاری بیان میں کہا یہ واضح ہے کہ آزاد کشمیر سمیت جموں و کشمیر کی پوری ریاست 1947 میں انضمام کی بنا پر بھارت کا حصہ ہے ۔ پاکستان کے زیر قبضہ حصے کی حیثیت کو تبدیل کرنے کے اقدام کو قانونی بنیاد حاصل نہیں اور ایسا کوئی بھی اقدام ناقابل قبول ہے ۔ پاکستان کو اپنے زیر قبضہ علاقوں کو فوری طور پر خالی کرنا ہوگا۔ خیال رہے ن لیگ کی حکومت کے زیر تحت آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی نے یکم جون کو آزاد جموں و کشمیر کے آئین میں ترمیم کی منظوری دی تھی۔ 21 مئی کو پاکستانی وزیر اعظم شاہد خاقان نے گلگت بلتستان پر اپنے حکمنامے کے ذریعے مقامی کونسل سے مزید اختیارات حاصل کرلئے تھے جس پر بھی بھارت نے احتجاج ریکارڈ کرایا تھا۔