اسلام آباد ( خصوصی نیوز رپورٹر) اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے قائم مقام صدر محمد نوید ملک نے کہا کہ نگراں حکومت نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اچانک اضافہ کر کے کاروباری برادری اور عوام کیلئے نئی مشکلات پیدا کر دی ہیں کیونکہ اس سے کاروبار کی لاگت میں مزید اضافہ ہو گا، پیداواری سرگرمیاں متاثر ہوں گی ، برآمدات مہنگی ہونے سے کم ہوں گی، عوام کیلئے مہنگائی بڑھے گی اور معیشت کی ترقی متاثر ہو گی لہذا انہوں نے نگراں حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنے فیصلے پر نظرثانی کرے اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمت میں اضافہ واپس لے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے پیٹرول کی قیمت میں 4.26روپے فی لیٹر، ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 6.55روپے فی لیٹر اور مٹی کے تیل کی قیمت میں 4.46روپے فی لیٹر اضافہ کر دیا ہے جو موجودہ حالات کے تناظر میں ایک بہتر فیصلہ نہیں ہے کیونکہ اس سے عوام، کاروبار اور معیشت کیلئے مزید مسائل و مشکلات پیدا ہوں گی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں پہلے ہی تیل سے پیدا ہونے والی بجلی بہت مہنگی ہونے کی وجہ سے کاروبار کی لاگت میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے جس کا نتیجہ یہ ہے کہ ہماری برآمدات کو عالمی مارکیٹ میں سخت مقابلے کا سامنا ہے ۔