کالم نگار

اداریہ
اداریہ





سجاد میر
شہر آشوب

مستنصر حسین تارڑ
ہزار داستان

مجاہد بریلوی
شہر ناپرساں


عبداللہ طارق سہیل
وغیرہ وغیرہ


بشریٰ رحمان
چادر چاردیواری اور چاندنی

نو شی گیلا نی
کا لم کہا نی


افتخار گیلانی
مکتوب دہلی

خاور نعیم ہاشمی
پردہ اٹھتا ہے

رضا رومی
رومی نامہ


انجم نیاز
یادداشت از امریکا



خاور گھمن
گھمن گھیریاں


سعید خا ور
حر ف درما ں

راوٗ خالد
رولا رپہ


اشرف شریف
شہر نامہ


قدسیہ ممتاز
حرف تازہ


سعود عثمانی
دل سے دل تک

اثر چوہان
سیاست نامہ

ارشاد محمود
بات یہ ہے

وسی بابا
باتاں

راحیل اظہر
غبارِخاطر

عمر قاضی
لالہ صحرائ

احمد اعجاز
کہانی کی کہانی

رعایت اللہ فاروقی
گفتار و پندار

عبدالرفع رسول
مکتوب سری نگر



یوسف سراج
نقش قدم


محمد عامر رانا
اقلیم در اقلیم

رحمت علی رازی
درون پردہ

خالد ایچ لودھی
دل کی باتیں




کالم

آج کے کالم 

  


کالم آرکیو

تیر یا تُکّا

اتوار 20 مئی 2018ء
ارشاد احمد عارف

میاں نواز شریف کا بیانیہ پاکستان میں کتنا مقبول ہوا؟ وثوق سے کچھ کہنا مشکل ہے۔ مسلم لیگ(ن) میں مچی بھگدڑ اور وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے علاوہ‘ میاں شہباز شریف و نثار علی خاں کے متضاد بیانات تو اس بیانئے کو لغو ثابت کرتے ہیں مگر یہ بات ماننی پڑے گی کہ امریکہ اور بھارت نے بیانیے کا خیر مقدم کیا۔ میری اطلاع کے مطابق دو روز قبل بھارتی سیکرٹری خارجہ وجے کیشو گھوکلے نے ایڈیٹرز سے آف دی ریکارڈ گفتگو میں کہا کہ بھارت نے انگریزی اخبار ڈان کو دیے گئے نواز شریف کے انٹرویو کا خیر
مزید پڑھیے


گھرکا بھیدی لنکا ڈھائے

اتوار 20 مئی 2018ء
سعید خا ور

پاکستان کی سیاست ان دنوں مختلف بیانیوں کے اردگرد گھوم رہی ہے،اشرافیہ کا بیانیہ، ریاست کا بیانیہ،پاکستان سے متعلق ٹرمپ مودی بیانیہ،معزول وزیر اعظم نواز شریف کا بیانیہ۔ان مختلف بیانیوںسے سیاسی پارہ بہت اوپر چلا گیا ہے۔مقدمات اور سیاسی تاریکیوں میں گھرے تاحیات نااہل میاں نواز شریف کے تازہ دم بیانیے نے پوری دنیا میں اودھم مچا دیا ہے اوریہ محض اتفاق نہیں ،سب کچھ لگتا ہے کہ منصوبہ بندی کے تحت ہوا ہے،کیونکہ اس بیانیے سے ٹرمپ مودی بیانیے کو تقویت ملی ہے،ایک ایسے شخص کی طرف سے ممبئی حملے سے متعلق متنازعہ بیان اوراس کی ٹائمنگ بہت معنی
مزید پڑھیے


ڈیجیٹل میڈیا کا نیا فیز

اتوار 20 مئی 2018ء
محمد عامر خاکوانی
اخبارات آن لائن ہونے کے فائدے بھی ہوئے ہیں اور اکا دکا نقصان بھی سامنے ا ٓرہا ہے۔ پہلے عام طور پر ایک اخبار کا قاری برسوں تک بلکہ کبھی تو تاحیات وہی اخبار پڑھتا رہتا تھا۔ دفتر میں یا کسی کے گھر کوئی اور اخبار دیکھ لیا تو دیکھ لیا، ورنہ اس کا مبلغ علم اس کے پسندیدہ اخبار کے رپورٹروں کی خبروںاور کالم نگاروں کے کالموں تک محدود تھا۔ اب ہر اخبار آن لائن ہے، لوگ دفتر کے ڈیسک ٹاپ ، لیپ ٹاپ یا پھر اپنے سمارٹ فون کی مدد سے دیگر اخبارات بھی دیکھ لیتے ہیں۔ خاص
مزید پڑھیے


حلف پاکستان سے وفاداری اور ترجمانی؟

اتوار 20 مئی 2018ء
خالد ایچ لودھی
دولت اور اقتدار کی ہوس انسان کو اس حد تک بے بس کردیتی ہے کہ وہ اس کے نشے میں مست ہو کر اپنی زندگی میں صرف اسی کا ہو کر رہ جاتا ہے اور پھر اپنی دولت اور اقتدار کو بچانے کے لیے ہر حربہ استعمال کرتا ہے۔ ذرا اندازہ کریں کہ تین بار وزیراعظم کے عہدے پر رہنے والا شخص اپنے وطن کی جڑیں کھوکھلی کرنے کی آخری حدیں بھی پار کر گیا ہے۔ قوم کی بدقسمتی دیکھیں کہ پورا ملک اس نااہل ہوئے وزیراعظم اور اس کے سمدھی کی وجہ سے اقتصادی طور پر تباہ ہو چکا
مزید پڑھیے


فلسطین کا نوحہ محمود درویش کی زبان میں

اتوار 20 مئی 2018ء
سعدیہ قریشی
دو سے آٹھ شہیدوں اور دس زخمیوں بیس گھروں اور پچاس زیتون کے پیڑوں کا قتل عام ہمارا روزانہ کا نقصان ہے (محمود درویش) فلسطین کے بے خانماں حساس دل شاعر محمود درویش کی یہ نظم کے چند مصرعے ہیں۔ محمود درویش نے اپنے ایک ایک حرف میں اپنی ماں دھرتی کی بدنصیبی کو سمو دیا ہے ستر سال ہوتے ہیں۔ فلسطین کی سرزمین پر جبر اور قہر کے سائے ہیں۔ بدنصیبی اور بے گھری اس کے مکینوں کا مقدر ہیں۔ یہاں بچے پیدا ہی اس لیے ہوئے ہیں کہ کسی ظلم کے اندھے لمحوں میں اپنی مائوں کے سامنے قتل کردیئے جائیں۔فلسطینی مائوں نے اپنی اوڑھنیاں
مزید پڑھیے


الزامات کی سیاست

اتوار 20 مئی 2018ء
راوٗ خالد
پاکستان میں اسٹیبلشمنٹ پر الزامات لگانے کی دہائیوں پر پھیلی ہوئی تاریخ ہے۔ اس کی طرف سے سازشوں کے الزامات ہر سیاستدان لگاتا رہا ہے، اور حکمرانی ختم ہونے کے بعد خاص طور پر ملک کو لاحق خطرات کے بارے میں بھی آگاہی دی جاتی رہی ہے ۔ اس بات سے انکار مشکل ہے کہ پاکستان کی سیاست میں اسٹیبلشمنٹ کاکو ئی کردار نہیں رہا۔اگر بہت پرانی باتوں کا ذکر نہ بھی کریں تو اس کا ذکرآئی جے آئی کی تشکیل سے لے کر 2013 ء کے انتخابات تک بار بار ملتا ہے۔آئی جے آئی کا مقدمہ تو زیر تفتیش
مزید پڑھیے


انتخابات میں مذہبی جذباتیت کا عنصر

اتوار 20 مئی 2018ء
محمد عامر رانا
جوں جوں عام انتخابات قریب آ رہے ہیں ملکی سیاست کا درجہ حرارت توں توں بڑھ رہا ہے۔ اس انتخابی منظر نامے میں ملک کی مذہبی سیاسی جماعتوں نے بھی نئی صف بندی کے ساتھ عوام کے مذہبی جذبات کا سہارا لے کر انتخابی مہم شروع کر دی ہے۔ البتہ میڈیا اور ٹی وی کیمروں کی تمام تر توجہ پنجاب اور کراچی کے سیاسی منظر نامے پر مرکوز ہے۔ قومی سطح پر سیاسی منظر نامے میں جہاں ہلچل برپا ہے اس ہنگامے میں مسلم لیگ ن میں تخریب اور پاکستان تحریک انصاف کی تنظیم نو کا عمل بھی جاری ہے۔
مزید پڑھیے


مگرنواز شریف نہیں مانتے!!

اتوار 20 مئی 2018ء
عمر قاضی
سندھ کی ادبی تاریخ بہت خوبصورت اور بہت کھوئی ہوئی ہے۔ سندھ کا ادب صرف شیخ ایاز یا شاہ لطیف اور سچل سرمست تک محدود نہیں ہے۔ شاہ لطیف سے پہلے ایک بزرگ شاعر’’ عبدالکریم بلڑی وارو‘‘ بھی تھے ۔جنہوں نے لکھا تھا : کاتب لکھے جیسے لام اور الف ملا کر ہم نے ساجن تیسے من میں ہے محسوس کیا مگر اس صوفی فقیر سے قبل بھی سندھ میں بہت خوبصورت شاعروں نے جنم لیا۔ ان شاعروں نے زندگی اور محبت کا حسن بیان کیا۔ ان شاعروں میں ایک شاعرنے لکھا تھا: گوری جس تالاب سے نہا کر نکلتی ہے اس کے لہروں کی
مزید پڑھیے


خدارا مجھے صحافی نہ کہو

اتوار 20 مئی 2018ء
خاور نعیم ہاشمی
لاہور کی بہت ساری چیزیں ادھر ادھر ہوگئی ہیں۔ کچھ نشانیاں معدوم اورکئی دفن ہو چکی ہیں۔ ساٹھ اور ستر کی دہائی تک ہر گلی محلے میں ایک بدمعاش ہوا کرتا تھا، کسی کے نام کے ساتھ چھری مار اور کسی کے ساتھ چاقو مار کا خطاب ہوتا،ایک بد معاش کو بہناں والا کا لقب بھی ملا، کیونکہ وہ سات بہنوں کا اکیلا بھائی تھا،پیر غازی روڈ اچھرہ کی دھوبی اسٹریٹ کا ایک کردار بشیرا غنڈہ تھا، گلی کی عورتیں کہا کرتی تھیں،،بشیرا کبھی محلے کی کسی بیٹی، بہن کی طرف آنکھ اٹھا کر نہیں دیکھتا،، محلے میں سر جھکا
مزید پڑھیے


لڑکی‘ قرطبہ چلی جائو‘ غرناطہ چلی جائو

اتوار 20 مئی 2018ء
مستنصر حسین تارڑ
اندلس میں‘ قرطبہ میں‘ مسجد قرطبہ میں‘ پاکستانی عمر رسیدہ سیاح خواتین اور ان میں کچھ کے ہاتھوں میں ’’اندلس میں اجنبی‘‘ جس کے ورق پلٹ پلٹ کر پڑھتی تھیں کہ اس تارڑ نے مسجد قرطبہ کے ستونوں کے بارے میں کیا لکھا ہے۔ جب ان میں سے ایک نے میری بیگم سے دریافت کیا جبکہ وہ نہ جانتی تھی کہ وہ میری بیگم ہے۔ پوچھا کہ کیا آپ نے تارڑ کی یہ کتاب پڑھی ہے تو میمونہ بیگم نے ناک چڑھا کر کہا تھا۔ یہ تارڑ میرا خاوند ہے اور اس نے زبردستی مجھے یہ پوری کتاب پڑھ کر
مزید پڑھیے


کُھرچے ہوئے لفظوں کا وارث

اتوار 20 مئی 2018ء
محمد اظہارالحق
یہ ایک اداس کرنے والی صبح تھی۔ دھوپ نکلی ہوئی تھی مگر یوں لگتا تھا۔ جیسے دل کے اندر دن ڈھل رہا ہو اور سائے لمبے ہو رہے ہوں۔ ایک پارسل موصول ہوا یکدم فضا بدل گئی۔ یہ معین نظامی کی شعری کلیات تھی۔ پا کر‘ دیکھ کر اور ورق گردانی کر کے یوں لگا جیسے ؎ بہت رونق ہے دل میں‘ بھاگتی پھرتی ہیں یادیں حلب سے قافلہ جیسے روانہ ہو رہا ہے معین نظامی میرا پسندیدہ نظم گو ہے۔ معین نظامی‘ وحید احمد اور فرح یار۔ یہ جدید نظم کی تکون ہے اور کیا غضب کی تکون ہے!
مزید پڑھیے


بھارتی اشتعال انگیزی اور سرحد پر بڑھتی ہلاکتیں

اتوار 20 مئی 2018ء
اداریہ
بھارتی فوج کی سحری کے وقت ورکنگ بائونڈری کے چپراڑ‘ ہرپال‘ معراجکے اور ظفر وال سیکٹرز میں شہری آبادی پر بلا اشتعال فائرنگ اور گولہ باری سے ایک خاتون سمیت5افراد شہید ہو گئے ہیں۔ بھارتی حکومت اور جارح فوج کو جب مقبوضہ کشمیر میں تحریک آزادی کو دبانے میں ناکامی اوروہاں پر ڈھائے جانے والے مظالم سے عالمی برادری کی توجہ ہٹانا ہوتی ہے تو بھارتی سکیورٹی فورسز کنٹرول لائن اور ورکنگ بائونڈری پر بلا اشتعال فائرنگ شروع کر دیتے ہیں۔ گزشتہ سال بھارت کی طرف سے 1800مرتبہ سیز فائر معاہدہ کی خلاف ورزی کی گئی۔ رواں برس میں 5ماہ
مزید پڑھیے


او آئی سی مسلمانوں کا تحفظ کرنے میں ناکام

اتوار 20 مئی 2018ء
اداریہ
اسرائیل کے ہاتھوں درجنوں فلسطینیوں کی شہادت کے بعد او آئی سی کے ہنگامی اجلاس میں مسلم ممالک نے سلامتی کونسل کو دوہرا معیار ترک کرنے کا کہا ہے۔ دنیا بھر میں اسرائیلی بربریت کے خلاف غم و غصہ پایا جاتا ہے۔ مسلم ممالک نماز جمعہ کے بعد فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے احتجاجی جلوس نکالے گئے۔ مسلم ممالک او آئی سی کے پلیٹ فارم سے دنیا بھر میں مسلمانوں کے قتل پر اقوام متحدہ کی خاموشی پر موثر موقف اپنا کر اسے ایکشن پر مجبور کر سکتے تھے لیکن اس کانفرنس میں ماضی کی طرح چند الفاظ
مزید پڑھیے


نواز بیانیہ:امریکہ اور بھارت کا ردعمل

اتوار 20 مئی 2018ء
اداریہ
میاں نواز شریف کے ریاست مخالف بیان پر دو ممالک کا ردعمل آیا ہے۔ امریکہ کے محکمہ دفاع کا کہنا ہے کہ ممبئی حملوں کے ماسٹر مائنڈ آزاد پھرنے پر امریکہ کو تحفظات ہیں۔ امریکہ کا کہنا ہے کہ پاکستان دہشت گردی کا سپانسر اور متاثرہ ہے۔ علاقائی سکیورٹی کے لیے پاکستان بہت کچھ کر سکتا ہے‘ امید کرتے ہیں کہ وہ علاقائی سکیورٹی کے سلسلے میں ہمارا شراکت دار ہو گا‘‘ دوسرا ردعمل بھارت نے جاری کیا ہے۔ بھارتی سیکرٹری خارجہ کا کہنا ہے کہ نواز شریف کے متنازع انٹرویو کا بھارت نے خیر مقدم کرنے کا فیصلہ اس
مزید پڑھیے


تجھے دروازہ بند ہونے کی خبر ملتی ہے اور مجھے کھُلنے کی

هفته 19 مئی 2018ء
محمد اظہارالحق

وزارت عظمیٰ میاں محمد نواز شریف صاحب کے لیے کیا تھی؟ ایک پکنک!یا تفریحی تعطیل!!

آپ کلنٹن یا اوباما کی وہ تصاویر دیکھیے جب وہ صدارتی محل میں داخل ہوئے قابلِ رشک صحت! عرصۂ اقتدار کے بعد کی تصویریں ملاحظہ کیجیے۔ جوانیاں ڈھل گئیں۔ چہروں پر جھریاں پڑ گئیں۔ بال کہیں کھچڑی، کہیں سفید ہو گئے اس لیے کہ حکومت کرنا پھولوں کی سیج پر بیٹھنا نہیں، خاردار جھاڑیوں سے گزرنا ہے۔ صبح سے لے کر آدھی رات تک، ایک اجلاس کی صدارت پھر دوسرے کی، پھر تیسرے کی! پھر غیر ملکی حکمرانوں سے میز پر اپنی ٹیم کے ساتھ بیٹھ
مزید پڑھیے