لاہور(انورحسین سمرائ) سعودی عرب کی طرف سے بطور تحفہ پاکستان بھجوائی گئی کھجوروں کو ماہ مقدس کے اختتام تک نادار اور ضرورت مند افراد میں تقسیم نہ کیا جاسکا ۔ وفاقی اور صوبائی حکومتیں لیٹر بازی میں مصروف رہیں جبکہ کھجوروں کے خراب ہونے کا خدشہ پیدا ہوگیا۔ سعودی حکومت نے جذبہ خیر سگالی کے پیش نظر پاکستانی حکومت کو سینکڑوں کلو اعلیٰ معیار کی کھجوریں رمضان المبارک سے قبل بھیجی تھیں۔ کیبنٹ ڈویژن نے تقسیم و ترسیل کے انتظامات کے بجائے ایک افسر کو فوکل پرسن نامزد کرنے پرہی اکتفا کیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی سربراہی میں تحفہ میں آنیوالی کھجوروں کی صوبوں میں تقسیم کا فیصلہ کیا گیا تھا۔اس فیصلہ کے مطابق ان کھجوروں میں سے پنجاب کو 1840 کاٹن الاٹ کرکے چیف سیکرٹری پنجاب کو 31 مئی کو خط لکھا گیا کہ پنجاب 10 دن میں کیبنٹ ڈویژن سے یہ کاٹن اٹھا لے ۔ تاہم رمضان المبارک ختم ہونے کو ہے اورکیبنٹ ڈویژن کھجوروں کو صوبوں میں ترسیل کرسکا نہ صوبے اپنے حصہ کی کھجوریں اٹھا سکے ۔ کیبنٹ ڈویژن کے اسسٹنٹ ڈائریکٹروفوکل پرسن عامر قریشی نے بتایا کہ بدھ کو کھجوروں کو صوبوں کے حوالے کردیا گیا ہے ۔ تحفہ آئی کھجوریں