لاہور( این این آئی ) (ن) لیگ کے صدر شہباز شریف نے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان سے ماضی میں کے گئے وعدوں ،دعوئوں ، خیبر پختوانخواکی سابق حکومت کی کارکردگی کے حوالے سے 26سوالات پوچھ لئے ۔ شہباز شریف کی جانب سے کہا گیا ہے کہ سوالات پی ٹی آئی کو اسکے وعدے ، دعوے یاد دلانے کیلئے کر رہا ہوں۔ پی ٹی آئی سربراہ نے 350 ڈیمز، 250کالجز، ایک ہزار سٹیڈیم بنانے کے جو دعوے کئے تھے وہ کہاں ہیں ۔کیا خیبر پختونخوا میں 90دن میں کرپشن ختم ہوگئی یا پوری تحریک انصاف ہی کرپٹ نکلی ۔عمران بتائیں خیبر پختونخوا کوآئندہ100 سال تک فائدہ دینے والے منصوبے کہاں ہیں؟۔ وزیر اعلی ہائوس میں بننے والی یونیورسٹی کو کون سے راستے جاتے ہیں، پشاور دنیا کا دوسرا گندا ترین شہر کیسے بنا ۔ ٹرین منصوبے کا کیا ہوا ۔ غیر ممالک سے نوکریوں کیلئے آنیوالے غیر ملکی کہاں چھپے ہوئے ہیں، قوم کو بتائیں کہ خیبر پختونخوا میں احتساب کا حال کیا ہوا۔کیا خیبر پختونخوا میں اقربا پروری،میرٹ کی دھجیاں اڑنا بند ہو گئی ہیں۔کیاافغانستان سے منشیات کی سمگلنگ خیبر پختونخوا کی مثالی پولیس نے روک لی ۔ کیا پی ٹی آئی نے الیکٹ ایبلز کی بجائے مخلص کارکنوں کو ٹکٹ دئیے ۔کیاعمران نے وی آئی پی پروٹوکول کیساتھ سرکاری املاک کا ذاتی استعمال نہیں کیا۔کیاعمران نے جھوٹ کی بجائے قوم سے سچ بولا اور یوٹرن لینا بند کردئیے ۔عمران آئین کا احترام کرتے ہیں تو پھر عدالت سے تین سال مفرور کیوں رہے ۔ جس پارلیمنٹ پر لعنت بھیجتے رہے پھر اسی سے تنخواہ کیوں لیتے رہے ،کیا لعنت بھیجنے والا شخص جمہوری سیاستدان کے زمرے میں آتا ہے ۔انقلابی رہنما نے 5 سال میں 3 کھرب روپے قرضے کیوں لیے ۔2013 میں صادق و امین نیازی کے اثاثے ڈیڑھ کروڑ تھے ،2017 میں ڈیڑھ ارب کیسے ہو گئے ،کیا عمران ذرا قوم کو بتائیں گے کہ آپکا ذریعہ آمدنی کیا ہے ؟۔ امید ہے تحریک انصاف گالم گلوچ کی بجائے مذکورہ سوالات کے سنجیدہ جوابات دیگی ۔ شہباز شریف سے اٹک سے تعلق رکھنے والے سابق رکن اسمبلی ملک سہیل خان کامریال نے ملاقات کی۔ ملک سہیل نے شہباز شریف کی قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا ۔