لاہور،اسلام آباد، کراچی (نمائندہ خصو صی سے ، سٹاف رپورٹر، نامہ نگار خصو صی ،خبر نگار خصو صی،92 نیوز رپورٹ) پی ڈی ایم اتحاد سے متعلق اختلافات پر پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن والے آمنے سامنے آ گئے ۔پیپلز پارٹی وسطی پنجاب کے جنرل سیکرٹری چودھری منظور احمد نے کہاہے کہ ایئر بلیو طیارے کی طرح پی ڈی ایم کو بھی پہاڑوں سے ٹکرا دیا گیا ہے ،شاہد خاقان نے پہلے پی آئی اے کو تباہ کیا اور اب پی ڈی ایم کو کر رہے ہیں، جونیئرز کے احکامات ماننے کے عادی سیاستدان نے سینئر اتحادیوں کو شوکاز بھیج دیا ہے ۔جمعیت علمائپاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل پیر سید محمد صفدر شاہ گیلانی نے قمر زمان کائرہ ،چوہدری منظور احمد سے ملاقات کی، متوقع سیاسی تبدیلیوں پر گفتگو کی گئی۔ قمر الزمان کائرہ نے کہا کہ پی ٹی ایم میں اختلاف سے اپوزیشن سیاست کو دھچکا لگا،پی پی پی اصولی اور جمہوری اقدار کا تحفظ کرے گی۔پیپلزپارٹی کی مرکزی مجلس عاملہ کا اجلاس 11 اپریل کو طلب کر لیا گیا، پی ڈی ایم میں رہنے یا الگ ہونے کے متعلق غور ہو گا، نیر حسین بخاری نے کہا ہے کہ ایگزیکٹو کمیٹی کا اجلاس اتوار اا اپریل کو دن ایک بجے بلاول ہاؤس کراچی میں ہوگا ۔پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ عمران خان حکومت عوام کی صحت کو خطرے میں ڈال رہی ہے ۔ عالمی یومِ صحت پر اپنے بیان میں بلاول بھٹونے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کی صحت پالیسی صحت برائے اشرافیہ ہے ، سلیکٹڈ حکومت شعبہ صحت عامہ کو بھی منظم طریقے سے تباہ کرنے پر بھی اسی طرح تلی ہوئی ہے ۔ ۔مسلم لیگ ن کے سیکرٹری جنرل احسن اقبال نے پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی ڈی ایم کا وارث وہ ہے جو اس کے فیصلے کو مانے ،ہمیں افسوس ہے کہ دو جماعتوں نے ہمارا ساتھ نہیں دیا ،ہماری توپوں کا رخ اپوزیشن کی طرف نہیں بلکہ عمران خان نیازی کی طرف ہے ،شہباز شریف کو وزیراعظم کے امیدوار کی خواہش ہمارے اتحادی کی تھی ۔ لیگی رہنماسینٹر اعظم نذیر تارڑ نے کہاہے کہ حکومت اب یوٹرن سے نکل کر تباہی پھیلانے کے فیصلے کر رہی ہے ،جہانگیر ترین کو انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے ، خسرو بختیار، پرویز خٹک اور علیم خان کے کیسسز کٹھائی میں پڑے ہوئے ہیں، حکومت کے اندر بھی سیلیکٹڈ انتقامی کارروائیاں ہو رہی ہیں، جہانگیر ترین کو سینٹ انتخابات میں حفیظ شیخ کی شکست کا باعث سمجھا جا رہا ہے ، امید کرتے ہیں کہ پیپلز پارٹی اچھا فیصلہ کرے گی۔