احمد اعجاز

ہجرت کا موسم

هفته 19 مئی 2018ء
موسم تبدیل ہوتے ہی پرندے ہجرت کیوں شروع کردیتے ہیں؟ مثال کے طورپر سردیاں شروع ہوتے ہی لاکھوں پرندے برفانی علاقوں سے میدانی علاقوں کی طرف ہجرت کر جاتے ہیں۔ کسی کے کہنے پر ایسا کرتے ہیں؟ ایک جواب تو یہ ہے کہ وہ ایسا خوراک کے لیے کرتے ہیں، دریائوں کے کناروں پر قیام کرتے ہیں۔ لیکن اس قدر طویل اور پُرخطر سفر صرف خوراک کے حصول کے لیے کرتے ہیں؟یا مقاصد کچھ اور ہوتے ہیں ؟ مگر موسمی پرندوں کے مقاصد اور کیا ہوسکتے ہیں؟ لیکن پرندوں کے ماہر نے ایک اہم سوال کھڑاکیا ہے۔ وہ کہتے ہیں ’’جب پُرخطر اورطویل سفر کے بعد ایک
مزید پڑھیے


کرنل سہیل شہید اور وارث

جمعه 18 مئی 2018ء
بلوچستان کے علاقے کلی الماس کو سکیورٹی فورسز نے گھیرے میں لے لیا۔ یہ گذشتہ روز کا واقعہ ہے۔ وہاںایک سو سے زائد معصوم افراد کا مجرمچھپا بیٹھا تھا۔ پاک فوج کے بہادر سپاہیوں نے ،انسانیت کے قاتل کو اپنے انجام تک پہنچایا۔ ایک سوسے زائد معصوم افراد کا قاتل پلک جھپکتے ہی موت کے منہ میں جا پہنچا۔ دوسری طرف دُشمن کو نیست ونابود کرنے والے کرنل سہیل شہید نے جامِ شہادت نوش کیا۔ اگلے دِن شہید سپاہی کی میت کو اُن کے آبائی گھرلایاگیا۔وہاں چالیس کروڑ آنکھیں ،منتظر تھیں۔ پورے فوجی اعزاز کے ساتھ آخری رسومات ادا کی گئیں۔ جب شہید سپاہی کو لحد میں
مزید پڑھیے


میز پر کہانی پڑی تھی

بدھ 16 مئی 2018ء
وہ دفتر پہنچا تو میز پر کہانی پڑی تھی۔ ’’مَیں بوڑھی اور بے سہارا ہوں۔دوبیٹیاں ہیں، ایک بیٹا ہے،سب پڑھ رہے ہیں۔ مَیں نے بطور ٹیچر ساری عمر خدمات سرانجام دیں۔ ریٹائرمنٹ پر گھر بنایا تو آٹھ لاکھ کر قرض سر پر چڑھ گیا۔اب رات کو نیند آتی ہے ،نہ دِن میں سکون میسر ہے۔ مجھے آٹھ لاکھ کی امداد چاہیے۔ ایسا قرض جو واپس نہ لیا جائے۔ اگر مجھے آٹھ لاکھ نہ ملے تو میرے گھر پر قبضہ ہو جائے گا۔ میری بچیاں ،میرا بچہ اور مَیں اُجڑ جائیں گے۔ آپ ہی بتائیں ،مَیں دربدر ہو کر کہاں جائوں گی؟ گلشن آراء زوجہ محمد بنارس،سرسید سٹریٹ،گلی نمبر
مزید پڑھیے


ملتان کا بوڑھا سیاست دان

منگل 15 مئی 2018ء
ملتان میں سابق وزیرِ اعظم نے زوردار تقریر کی۔ اسٹیج پر مخدوم جاوید ہاشمی بھی موجود تھے۔ سابق وزیرِ اعظم نے اپنے سگے بھائی شہباز شریف کو شاباش دی’’ اُنہوں نے ملتان کو ترقی یافتہ شہر بناڈالا۔ہماری حکومت نے ملک کو اندھیروں سے نکالا‘‘ لاہور میں بیٹھے شہباز شریف نے ،بڑے بھائی سے شاباش وصول کی۔ پھر بولے ’’ملتان والو! آپ کے وزیرِ اعظم کوبیٹے سے تنخواہ نہ لینے پر نکال دیا گیا۔ کیا اپنے ہی بیٹے سے تنخواہ نہ لینا جرم ہے؟اگر یہ جرم ہے تو اس کو باربار کروں گا‘‘ جلسہ گاہ میں موجود عوام نے ،اُنکے حق میںنعرے لگائے۔ پھربولے ’’ملتان والو!تم نے میرا دِل
مزید پڑھیے


پانی کا بحران

جمعه 04 مئی 2018ء

اقتدار کے حصول کے لیے ،سیاسی جماعتوں کے مابین ، عرصہ سے جنگ جاری تھی۔ مگر اقتدار پر کسی ایک جماعت کا کلی طور پر قبضہ نہیں ہورہا تھا۔ کوئی بھی سیاسی جماعت ،دوسری کے وجود کو تسلیم کرنے کے لیے تیار نہ تھی۔ جنگ کا آغاز ،ایک دوسرے کے خلاف بیان بازی سے ہوا۔ پھر بیان بازی میں شدت آتی گئی،معاملہ گالم گلوچ تک جاپہنچا۔ خاص طور پرسیاسی ورکر خواتین کو تذلیل کا نشانہ بنایا جانے لگا۔ گالم گلوچ اور لڑائی میں ماہر سیاسی رہنمائوں کو پارٹی میں اہمیت ملتی چلی گئی۔ جو جتنا بڑا منہ کھول کر گالی
مزید پڑھیے