BN

ارشاد محمود

چودھری نثار کس مخمصے میں ہیں؟

پیر 25 جون 2018ء
کوئی چودھری نثار علی خان سے پوچھے کہ وہ ایک ہی بار پریس کانفرنس کرکے بتاکیوں نہیں دیتے کہ کہنا کیاچاہتے ہیں۔ عرصے سے ایک تھیٹر لگایا ہوا ہے۔ ناراض ہونے پر جلد ہی راضی ہونے کی نوید بھی سنادیتے ہیں۔ فرماتے ہیں کہ عورت کی لیڈرشپ قبول نہیں اور کبھی عندیہ دیتے ہیں کہ سب ٹھیک ہوچکا ہے۔ ایک دوست نے چودھری نثارکی موجودہ کیفیت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا :وسدی وی نئیں۔نسدی وی نئیں۔تے کْج دَسدی وی نئیں۔ ان کی پریس کانفرنسوں سے اب تک ایک ہی نکتہ ابھر کرسامنے آیا کہ مسلم لیگ نون میں انہیں نوے کی
مزید پڑھیے


شجاعت بخاری کا جرم کیا تھا؟

هفته 16 جون 2018ء

یقین نہیں آتا کہ سینئر صحافی شجاعت بخاری کو دن دھاڑے سری نگر میں شہید کردیا گیا۔وہ کشمیر کے ہی نہیں بلکہ اس خطے کے ایک بڑے شہ دماغ قلمکار تھے۔ صحافی اور تجزیہ کار تو بہت ہوتے ہیں شجاعت بخاری کا دل اپنے لوگوں کے لیے دھڑکتاتھا۔وہ کشمیر میںجاری تشدد اور قتل و غارت کی محض خبریں نہیں چھاپتے تھے بلکہ حالات کو بدلنے کی بھی کوشش کرتے۔ کشمیر پر ہونے والی ہر پیش رفت سے نہ صرف باخبر ہوتے بلکہ حالات کے سدھار کے لیے سرگرم بھی ۔ اسی درد دل نے انہیں تنازعات کے پرامن اور مذاکرات
مزید پڑھیے


پاک بھارت تعلقات : جمود ٹوٹ رہاہے

بدھ 13 جون 2018ء
دہلی اوراسلام آباد سے پاک بھارت تعلقات میں نہ صرف بہتری کے اشارے مل رہے ہیں بلکہ الیکشن کے بعد دونوں ممالک کے درمیان رسمی مذاکراتی عمل بھی بحال ہونے کے روشن امکانات نظر آتے ہیں۔ بھارت سرکار نے طویل غور وفکر اور ناکام تجربات کے بعد بتدریج اپنی حکمت عملی تبدیل کی۔ سخت گیر پالیسی کے برعکس مکالمے کا راستہ اختیار کرنا شروع کردیا ہے۔ ممکن ہے کہ کوئی حادثہ اس عمل کو ابتدائی مرحلے میں ہی سبوتاژکردے جیسے کہ ماضی میں ہوتاآیا ہے تاہم اعلیٰ سطحی اجلاسوں میں طے پاچکا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان
مزید پڑھیے


ٹوئٹر پر الیکشن کا معرکہ

هفته 09 جون 2018ء
سوشل میڈیا پر الزامات ،جوابی الزامات اورگالم گلوچ کے ذریعے اس دفعہ الیکشن کا معرکہ لڑاجارہاہے۔ سیاسی جماعتوں اور سیاستدانوں کی سوشل میڈیا ٹیمیں ایک دوسرے کو چور، بدعنوان، ملک دشمن اور بے حیا ثابت کرنے کے لیے سرگرم ہیں۔پاکستانی سیاست سوشل میڈیا بالخصوص ٹوئٹر نے جس قدر تیزی سے مقبولیت حاصل کی اور روایتی میڈیا کو پس منظر میں دھکیلا وہ حیرت انگیز ہے۔ الیکشن کمیشن کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق اس وقت ملک بھر میں رجسٹرڈ ووٹروں کی تعداد 10 کروڑ 42 لاکھ 67ہے ۔ چار کروڑ 58 لاکھ کے لگ بھگ خواتین ہیں۔سیاسی جماعتوں کے
مزید پڑھیے


ریحام خان کی کتاب

پیر 04 جون 2018ء
تحریک انصاف کے مخالفین کی امیدوں کا مرکز اب ریحام خان کی کتاب بن چکی ہے۔ مارکیٹ میں آئے گی تو نہ صرف دھوم مچائے گی بلکہ تحریک انصاف والے منہ چھپاتے پھریں گے۔کتاب کی تقریب رونمائی کی منصوبہ بندی اس طرح کی گئی کہ وہ الیکشن میں موضوع بحث بن سکے ۔عمران خان کے حامیوں کو مایوس ہی نہیں بلکہ شرمندہ کردے۔ کتاب تو آیا ہی چاہتی ہے لیکن کیا یہ کتاب رائے عامہ کو متاثر اور تحریک انصاف کے حامیوں کے اعصاب شل کرپائے گی یا یہ بھی ایک مشق لاحاصل ہی ہوگی۔ لیڈروں اور سیاسی جماعتوں کے درمیان
مزید پڑھیے


آزادکشمیر : ایک سنگ میل طے کرلیا

هفته 02 جون 2018ء
ایک طویل اور اعصاب شکن جدوجہد کے بعد آزادکشمیر کو بااختیار بنانے اور انتظامی، مالی اور قانونی سازی کے اختیارات اسلام آباد میں’’آباد‘‘کشمیر کونسل سے مظفرآباد منتقل کرنے کا فیصلہ ہوگیا۔وفاقی کابینہ نے جاتے جاتے کچھ تاریخ ساز فیصلے کیے ان میں آزادکشمیر، گلگت بلتستان کو بااختیار بنانے اور قبائلی علاقہ جات کو خیبر پختون خوا میں ضم کرنے کے فیصلے نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور نون لیگ کی لیڈرشپ کو تاریخ میں ایک منفرد مقام عطا کیا ۔ ان کالموں میں متعدد بار یہ لکھا جاچکا ہے کہ آزادکشمیر کے شہری اور لیڈرشپ بلاجھجک کہتی تھی کہ
مزید پڑھیے


گلگت بلتستان ایک سنگ میل طے کرگیا

منگل 29 مئی 2018ء
احتجاجی مظاہروں کے باوجود وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے دیرینہ عوامی مطالبے کے پیش نظر گلگت بلتستان کے موجودہ قانونی ، آئینی اور انتظامی ڈھانچے میں بنیادی نوعیت کی تبدیلیوں کا اعلان کردیا ۔نئے نظام کو گلگت بلتستان ریفارمز آرڈر 2018 ء کا نام دیاگیا ۔نیا نظام تین برسوں کے طویل غورو فکر اور اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مشاورت کا ثمر ہے۔سرتاج عزیز جیسے زیرک اور منجھے ہوئے سیاستدان اور بیوروکریٹ نے محنت شاقہ کے بعد یہ خاکہ تیار کیا۔ نئے آڈر کے تحت گلگت بلتستان کی اسمبلی اور حکومت کو قانون سازی، مالیاتی اور ترقیاتی امور میں وہ تما م
مزید پڑھیے


قبائلیوں کو مبارک

هفته 26 مئی 2018ء
قومی اسمبلی میں قبائلی علاقہ جات کو خیبر پختون خوا میں ضم کرنے کا بل منظوری کے لیے پیش ہوا تو ارکان اسمبلی کے چہرے خوشی سے تمتما اٹھے۔عمران خان جو اسمبلی جانا توہین سمجھتے ہیں وہ بھی تشریف لائے اور خطاب بھی کیا۔ دھیمے مزاج کے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو یقین نہ آیا کہ دس ماہ کے مختصر دور اقتدار میں وہ ایک تاریخ رقم کررہے ہیں۔ قبائلی علاقہ کو قومی دھارے میں شامل کرنے کا عمل طویل اور تھکا دینا والا ہے۔ 1973میں افغانستان کے حکمران ظاہر شاہ کاتختہ الٹا گیاتو زیرک ذوالفقارعلی بھٹو کو اندازہ ہوگیا کہ
مزید پڑھیے


نریندر مودی کا دورہ کشمیر

پیر 21 مئی 2018ء
بھارتی وزیراعظم نریند مودی ایک بار پھر سری نگر وارد ہوئے جہاں ان کے اعزاز میں ایک استقبالیہ تقریب برپا ہوئی۔وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے مودی کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے رمضان میں جنگ بندی کا اعلان کیا۔ اب کشمیری مائیں چین سے سوسکیں گی کہ ان کے بچوں کی زندگی محفوظ ہے۔ دبے اور محتاط لفظوں میں انہوں نے مودی سے ’’درخواست‘‘ کی کہ وہ پاکستان کے ساتھ بات چیت کا عمل بحال کریں کیونکہ آپ بڑا ملک ہیں اور آپ کا دل بھی وسیع ہے۔ مودی نے محبوبہ کی تقریر کافی بے چینی سے سنی۔ ان کے سپاٹ
مزید پڑھیے


نوازشریف مکافات عمل کا شکار

هفته 19 مئی 2018ء
نوازشریف کے ممبئی حملے والے غیرضروری اور بے مقصد بیان نے ملکی سیاست میں تہلکہ مچادیا۔ ان کی مذمت ہرکوئی کررہاہے لیکن یہ اتنا سادہ مسئلہ نہیں جنتا بظاہر نظر آتاہے۔ حقیقت یہ ہے کہ انہوں نے یہ جوابہت سوچ سمجھ کر کھیلاہے۔کرپشن اور بدعنوانی کے مقدمات کو سویلین بالادستی ، جمہوری نظام اور منتخب حکومت کی پالیسی سازی کے معاملات میںفیصلہ کن حیثیت کی جدوجہد کا عنوان دے کر انہوں نے عدلیہ اور اسٹیبلشمنٹ کو مشکل صورت حال سے دوچار کردیا ہے۔ پاکستان میں جمہوریت کی لڑائی ہمیشہ محترمہ بے نظیر بھٹو لڑا کرتیں تھیں۔ عالمی طاقتیں اور دنیا
مزید پڑھیے