BN

افتخار گیلانی


آذربائیجان کی فتح: ایک نئے ورلڈ آرڈر کی نوید


آذربائیجانی صحافی جیحون علییوف کے مطابق 1990سے مذاکرات کی میزوں پر اور بین الاقوامی برادی کے توسل سے متواتر آذر بائیجان بتانے کی کوشش کر رہا تھا ، کہ اگر آرمینیا ٹرانزٹ کوریڈورز میں آمد و رفت بحال کرنے، مہاجرین کی واپسی اور کاراباخ کے نچلے علاقوں کو واپس کرنے پر آمادہ ہوتا ہے ، تو وہ اس کو بطور حتمی حل ماننے کیلئے آمادہ ہے۔ مگر آرمینیا ہمیشہ اسکو ٹھکراتا آیا ہے۔ اب جنگ کے بعد روس اور ترکی کی ایما ء پر ایسا ہی معاہدہ عمل میں آیا ہے۔ اب نچلے تمام علاقوں سے ہاتھ دھونے
جمعه 27 نومبر 2020ء

آذربائیجان کی فتح: ایک نئے ورلڈ آرڈر کی نوید

منگل 24 نومبر 2020ء
افتخار گیلانی
آذربائیجان کی فوجیں پچھلے ہفتے جب نگورنوکاراباخ کے اہم شہر شوشا میں داخل ہوگئیں ، تو ترکی کے دارلحکومت انقرہ کے نواح میں رہنے والی ایک ضعیف العمر آذربائیجانی خاتون زلیخا شاناراوف نے گھر کے اسٹور سے ایک پرانا زنگ آلود صندوق نکالا، جس کو اسکی فیملی نے ماضی میں کئی بار کوڑے میں پھینکنے کی کوشش تھی۔مگر بڑی بی کا اس بکس کے ساتھ ایسا جذباتی رشتہ تھا کہ و ہ آسمان سر پر اٹھا کر اسکو ناکام بناتی تھی۔ شوشا کے آزاد ہونے کی خبر نے اس عمر رسیدہ خاتون کو گویا پھر سے جوان
مزید پڑھیے


بھارتی مسلمان ووٹرزـ: متبادل حکمت عملی کی ضرورت…(2)

بدھ 18 نومبر 2020ء
افتخار گیلانی
پارٹی نے مسلم لیڈروں کو یہ بھی بتایا تھا کہ انتخابات میں وہ ٹکٹ یا مینڈیٹ کے حصول کیلئے تگ و دو نہ کریں اور حلقہ کیلئے کسی مضبوط سیکولر ہندو امیدوار کر ترجیح دیکر اسکو کامیاب بنائیں۔انتخابات کے دوران اتر پردیش کا دورہ کرتے ہوئے د یو بند شہر میں معروف وکیل ندیم اختر نے راقم کو بتایا تھاکہ بی جے پی کو پتا ہے کہ مسلمان ان کے امیدوار کو ووٹ نہیں دیتا ہے اس لئے ا ن کا امیدوار ووٹ مانگنے ہی نہیں آتا ہے۔ اس کے لیڈروں کی کوشش ہوتی ہے کہ مسلم ووٹ
مزید پڑھیے


بھارتی مسلمان ووٹرزـ: متبادل حکمت عملی کی ضرورت

منگل 17 نومبر 2020ء
افتخار گیلانی
امریکی ووٹروں نے صدارتی انتخابات میں کورونا وائرس سے نمٹنے میں ناکامی، ابتر معیشت اور سیاہ فاموں کے خلاف نسلی تشدد کیلئے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کو وا ئٹ ہاوس سے باہر کا راستہ تو دکھا دیا، مگر ہزاروں میل دور بھارت کی مشرقی ریاست بہار کے حالیہ انتخابات میں جس طرح وزیر اعظم نریندر مودی کی پارٹی بی جے پی کے زیر قیادت اتحاد نے اقتدار میں واپسی کی، اس سے لگتا ہے کہ دہلی میں ہوئے مسلم کش فسادات ،کورونا وائرس سے نپٹنے میں ناکامی یا لاک ڈاون کی وجہ سے مہاجر مزدوروں کی حالت زار بھارتی ووٹروں کو
مزید پڑھیے


نئی امریکی انتظامیہ اور ترجیحات

منگل 10 نومبر 2020ء
افتخار گیلانی
2016میں جس وقت ڈونالڈ ٹرمپ ریپبلیکن پارٹی کی طرف سے صدارتی نامزدگی کیلئے جدوجہد کر رہے تھے، بھارتی اپوزیشن کانگریس کی صدر سونیا گاندھی علاج کے سلسلے میں امریکہ میں تھیں۔ واپسی پر جب و ہ پارلیمنٹ کے اجلاس میں شرکت کرنے کیلئے آئیں، تو وقفہ کے دوران سینٹرل ہال میں کئی صحافی اور سیاستدان ان کی خبر و خیریت دریافت کرنے کیلئے ان کے ارد گرد جمع تھے۔ مختلف موضوعات کے علاوہ امریکی سیاست بھی زیر بحث تھی۔ چونکہ وہ امریکہ سے تازہ وارد ہوئی تھیں، اکثر افراد ان سے متوقع امیدوارں، اور انکی کامیابی کے امکانات کے بارے
مزید پڑھیے



مغرب کے دوہرے معیار اور مسلم دنیا کی بے حسی …(2)

بدھ 04 نومبر 2020ء
افتخار گیلانی
چونکہ موصوف علیگڑھ کے فارغ التحصیل ہیں نیزپاکستانی چینل کے نمائندے ا ور سیفماکے رکن کی حیثیت سے پاکستان آنا جانا رہتا تھا، اسلئے اسلام سے متعلق واجبی سی اور مسلمانوں کے بارے میں سیر حاصل معلومات رکھتے ہیں۔ جب ان کی اس روش کے خلاف کوئی آواز اٹھاتا ہے تو ہمدردی بٹورنے کیلئے اظہار آزادی رائے کو آڑ بناکر مسلمانوں کے رویہ کو نشانہ بناتے ہیں۔ گو کہ بھارتی آئین کے بنیادی ڈھانچہ میں دفعہ 19کے تحت اظہار آزادی رائے کو شامل کیا گیا ہے، مگر اس کے ساتھ مناسب پابندیا ں بھی لگائی گئی ہیں، جن کو وقتاً
مزید پڑھیے


مغرب کے دوہرے معیار اور مسلم دنیا کی بے حسی

منگل 03 نومبر 2020ء
افتخار گیلانی
ڈنمارک کے ایک اخبار نے 2005میں جب پہلی بار توہین آمیز خاکے شائع کئے تو مسلم دنیا میں خاصا اضطراب پھیل گیا تھا۔ گو کہ فرانس کی موجودہ حکومت کی طرح ہی ڈنمارک نے بھی ان دنوں اظہار آزادی رائے کا حوالہ دیکر اعتراضات کو مسترد کردیا، مگر اسلامی دنیا کے سخت رد عمل اور مشرق وسطیٰ کے کئی ممالک کے عملاً اقتصادی تعلقات کو ڈاون گریڈ کر نے سے، کوپن ہیگن کی حکومت نے مسلم ممالک میں کئی وفود بھیجے اور سنجیدگی کے ساتھ اس ایشو پر غور و خوض کرنا شروع کردیا۔ اسی دوران ایک دن نئی دہلی
مزید پڑھیے


بھارت: نظریں ہیں بہار پر …(2)

جمعرات 29 اکتوبر 2020ء
افتخار گیلانی
سمستی پور میں سماجیات کے ایک ریٹائرڈ پروفیسر دھرمیندرکمار نے جو مختلف یونیورسٹیوںکی خاک چھاننے کے بعد اب اپنے آبائی گائوں واپس آکرکھیتوں کی نگرانی کر رہے تھے، بتایا کہ ایک دن اخبار میں انہوں نے پڑھا کہ ان کے کھیت کے پاس ایک ناکارہ اور زنگ آلود ٹیوب ویل کی مرمت کے لئے حکومت نے رقم خرچ کی ہے۔ جب انہوں نے حق اطلاعات قانون کا استعمال کرکے تفصیلات جاننا چاہی تو معلوم ہوا کہ پچھلے آٹھ برسوں کے دوران متواتر سرکاری فائلوں میں اس ٹیوب ویل کی مرمت پر رقوم خرچ ہوتی رہی ہیں۔ بہارکے
مزید پڑھیے


بھارت: نظریں ہیں بہار پر

منگل 27 اکتوبر 2020ء
افتخار گیلانی
نوے کی دہائی کے اوائل میں دہلی میں صحافت شروع کرتے ہی ایک بارمغربی بنگال کے ریاستی دارالحکومت کولکتہ میں منعقدہ ایک کانفرنس کو ر کرنے کا حکم صادر ہوا۔ سپر فاسٹ ڈیلکس ٹرین جب صبح سویرے پو پوٹھنے سے قبل ، اتر پردیش کے آخری اسٹیشن مغل سرائے (جس کا نام اب تبدیل کرکے دین دیال اسٹیشن رکھا گیا ہے) پہنچی، تو ڈبے میں چہ مگوئیاں ہو رہی تھی، کہ صوبہ بہار آرہا ہے، لوگ اپنا ساز و سامان چیک کرکے بساط کے مطابق محفوظ جگہوں پررکھ رہے تھے۔ میں پہلی بار اس لائن پر سفر کر رہا
مزید پڑھیے


امریکی انتخابات: بھارتی اور یہودی کمیونٹی کی اہمیت

جمعرات 15 اکتوبر 2020ء
افتخار گیلانی
ہاں، حقوق انسانی کے حوالے سے ڈیموکریٹک پارٹی کا موقف سخت ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ خطے میں بھارت کی اہمیت کے پیش نظر بائیڈن کی پالیسی ہمہ جہتی ہوگی اور چین سے نمٹنے کیلئے چار ملکی اتحاد آسٹریلیا، جاپان، بھارت اور امریکہ کو مزید جہت ملے گی۔بھارت کے تئیں بائیڈن کی خدمات کا ذکر کرتے ہوئے کپور کا کہنا ہے کہ 1975میں پہلے جوہری دھماکوں کے بعد جب امریکی کانگریس میں بھارت پر اقتصادی پابندیاں لگانے کی قرار داد پیش ہوئی توبس ایک ووٹ سے مستر د ہوئی ۔ وہ ایک ووٹ، جس نے بھارت کو پابندیوں سے
مزید پڑھیے