BN

بریگیڈئیر (ر)ارشد ملک


سیاسی اتحاد


دنیا بھر کی طرح پاکستان میں بھی کورونا اپنے پنجے گاڈ رہا ہے لیکن عوامی سطح پر اسے سنجیدگی سے نہیں لیا جا رہا۔ میڈیا چیخ چیخ کر بتا رہا ہے کہ روزانہ کیسز بڑھتے جا رہے ہیں اموات بڑھ رہی ہیں لیکن عوام تو کیا سیاسی لیڈر بھی اسے سنجیدہ نہیں لے رہے۔عام لوگوں کا خیال ہے کہ جلسے جلوسوں سے حکومت گرا نہیں سکتے لیکن جلسوں کی وجہ سے کورونا جس تیزی سے پھیلے گا اس کا اندازہ شاید کسی کو نہیں، اگر یہ اتحاد وبا کے دنوں میں جلسے کرتا رہا تو ہزاروں لوگوں کی زندگیاں دائو
اتوار 29 نومبر 2020ء

دھرنوں کی سیاست

اتوار 22 نومبر 2020ء
بریگیڈئیر (ر)ارشد ملک
چند روز قبل پھر سے اسلام آباد کو ایک دھرنے نے اپنی جکڑ میں لے لیا تھا۔ یہ دھرنا تقریباً 40گھنٹے رہا اور راولپنڈی اسلام آباد کے شہریوں کو مفلوج کر کے رکھ دیا گیا۔ حکومت سے مذاکرات کے بعد یہ دھرنا ختم ہوا۔ مذاکرات میں طے پایا کہ جلد پارلیمنٹ کا اجلاس بلا کر فرانس کے سفیر کو ملک بدر کیا جائے گا‘ پاکستان اپناسفیر فرانس نہیں بھیجے گا۔ پاکستان میں سرکاری سطح پر فرانس کی مصنوعات کا بائیکاٹ کیا جائے گا ۔جس کے بعد تحریک لبیک کا دھرنا ختم ہو گیا۔ یہ دھرنا تو ختم ہوا لیکن اب
مزید پڑھیے


مزاحمت سے مفاہمت تک

اتوار 15 نومبر 2020ء
بریگیڈئیر (ر)ارشد ملک
مریم نواز کے انٹرویو پر بحث شروع ہو گئی ہے کہ کیا ن لیگ اپنے بیانیے سے منحرف ہو رہی ہے‘ مفاہمت کی بات شروع کر دی ہے۔ مریم نے بی بی سی کے ساتھ انٹرویو سے ایک دن قبل ایک انٹرویو میں بالکل مخالف بات چیت کی۔بی بی سی سے بات میں مریم نے یوٹرن لیتے ہوئے کہا کہ اسٹیبلشمنٹ سے بات ہو سکتی ہے بشرطیکہ اس جعلی حکومت کو گھر بھیجا جائے۔ مریم نواز جلسوں میں کہتی رہی ہیں کہ ہماری لڑائی عمران سے نہیں اسے لانے والوں سے ہے۔ یہ لڑائی 2بڑوں کے درمیان ہے، بچوں
مزید پڑھیے