خاور نعیم ہاشمی

خدارا مجھے صحافی نہ کہو

اتوار 20 مئی 2018ء
لاہور کی بہت ساری چیزیں ادھر ادھر ہوگئی ہیں۔ کچھ نشانیاں معدوم اورکئی دفن ہو چکی ہیں۔ ساٹھ اور ستر کی دہائی تک ہر گلی محلے میں ایک بدمعاش ہوا کرتا تھا، کسی کے نام کے ساتھ چھری مار اور کسی کے ساتھ چاقو مار کا خطاب ہوتا،ایک بد معاش کو بہناں والا کا لقب بھی ملا، کیونکہ وہ سات بہنوں کا اکیلا بھائی تھا،پیر غازی روڈ اچھرہ کی دھوبی اسٹریٹ کا ایک کردار بشیرا غنڈہ تھا، گلی کی عورتیں کہا کرتی تھیں،،بشیرا کبھی محلے کی کسی بیٹی، بہن کی طرف آنکھ اٹھا کر نہیں دیکھتا،، محلے میں سر جھکا
مزید پڑھیے


اجمل قصاب سے اتفاق اسپتال تک

جمعه 18 مئی 2018ء
نواز شریف صاحب کے زیر بحث بیانیہ کے دوران سوشل میڈیا پر سرچ کرتے کرتے مجھے اجمل قصاب سے انڈین ایجنسیوں کی انوسٹی گیشن کی سات قسطوں پر محیط ایک ویڈیو ملی جسے میں نے بہت غور سے اور بار بار سنا،یہ انوسٹی گیشن جیل کے اسپتال میں کی گئی تھی اور اسے ایک بھارتی میڈیا گروپ نے وائرل کیا، اسے دیکھنے اور سننے کے بعد پاکستان کی ممبئی حملوں میں مکمل لا تعلقی از خود ثابت ہو جاتی ہے، یہ مکمل طور پر اصل ویڈیو ہے، اس کا مختصرخلاصہ اپنے قارئین کے لئے۔ اجمل قصاب نے کئی ایجنسیوں کے
مزید پڑھیے


آج رات،سوا آٹھ بجے

اتوار 13 مئی 2018ء
رات آج ہی کی تھی،وقت تھا سوا آٹھ بجے کا، سال انیس سو اٹھہتر،یعنی یہ کہانی ہے چالیس سال پرانی۔ مقام تھا لاہورکوٹ لکھپت جیل، وحشت کا کھیل کھیلنے کیلئے جیل کی دیوڑھی(دالان) منتخب کی گئی، وہاں تماشائیوں کیلئے کرسیاں بھی سجی ہوئی تھیں، اس رات تیز کالی آندھی بھی چلی،مگر تماشہ ملتوی نہ کیا گیا تھا، یہ حکم تھا پاکستان کے ڈکٹیٹر اعظم کا جسے ٹالا نہیں جا سکتا تھا، اور جو اس تماشہ کو دیکھنے آئے تھے، انہیں تماشہ دکھائے بغیر واپس نہیں بھجوایا جا سکتا تھا ۔ انیس سو ستتر میں ذوالفقار علی بھٹو کا تختہ الٹ کر مارشل
مزید پڑھیے


انسانوں کی سرکس

جمعه 11 مئی 2018ء

محترم چیف جسٹس پاکستان اخبارات اورنیوز چینلز سے پتہ چلا کہ عدلیہ نے بعض اداکار اینکرز پر رمضان المبارک کے دوران پابندیاں لگا دی ہیں،انہیں کہا گیا ہے کہ وہ اپنے پروگرامزمیں لاٹری، جواء اورسرکس جیسے سیگمنٹس شامل نہیں کر سکتے، خلاف ورزی پر عمر بھر کی نا اہلی کی سزا دیدی جائے گی۔با با جی! کچھ دوست اسے آزادی صحافت پرپہرہ قرار دے رہے ہیں تو کچھ اس کے فیصلے کی تائید۔۔۔ اسی طرح کے کچھ میزبانوں سے تو پوری قوم ہی تنگ ہے ،لوگ امید کررہے ہیں شاید کہ آپ کچھ مدد فرمائیں ۔ جناب چیف جسٹس !
مزید پڑھیے


اصغر خان کیس… پس منظر،پیش منظر

اتوار 06 مئی 2018ء

حامد میر کے عمران خان سے دوستانہ انٹرویو کو مکمل دیکھنا اور اسے سمجھنا ضروری تھا، سو پورا دیکھا، پورا سمجھا، مہمان اور میزبان دونوں کاریگر تھے،دونوں نے کمال مہارت سے ایک دوسرے کو چھکے مارنے سے روکے رکھا، حامد میر کی باؤلنگ اچھی تھی،مگر وکٹ پر عمران خان تھے۔ عمران خان نے نواز شریف کے تین بار وزیر اعظم بننے کو فوج کا کرشمہ قرار دیا تو میزبان نے فوج کے بحیثیت ادارہ جمہوریت کے خلاف اقدامات کا سوال اٹھا دیاتو عمران خان نے جواب دیا کہ ماضی کے دو تین سپہ سالاروں نے انفرادی طور پر اپنی وردی
مزید پڑھیے


وہ عورتیں کیوں رو رہی تھیں؟

جمعه 04 مئی 2018ء

پی ٹی آئی کا جلسہ جاری تھا، کوئی جلسے میں تھا یا میری طرح ٹی وی کے سامنے بیٹھا ہوا ، سب جلسے میں عمران خان کی آمد کے منتظرتھے ،کراچی میں جونہی بلاول کا خطاب ختم ہوا کپتان لاہور میں اسٹیج کی سیڑھیاں چڑھتے ہوئے دکھائی دیے، عمران خان کی طرف سے پی ٹی آئی کا گیارہ نکاتی ایجنڈا پیش کرنے کا اعلان سامنے آ چکا تھا، میری بھی ان نکات میں دلچسپی تھی، جونہی کپتان نے بولنا شروع کیا، میرے کان کھڑے ہوگئے،،، مگر یہ کیا، پی ٹی آئی کے چیئرمین نے شوکت خانم ہسپتال کی کہانی سنانا
مزید پڑھیے


میں اپنے باپ کو کیوں یاد کرتا ہوں

هفته 28 اپریل 2018ء

نعیم ہاشمی صاحب کی آج بیالیسویں برسی ہے،اس تقریباً نصف صدی میں مجھ سے جو سوال سب سے زیادہ پوچھا گیا: تم اپنے باپ سے اتنی محبت کیوں کرتے ہو؟ میں نے اس سوال کا جواب کبھی کسی کو نہیں دیا، بس مسکرا کے رہ گیا، آج پہلی بار لب کشائی کر رہا ہوں، لیکن پہلے تھوڑی سی تمہید۔ میں اپنے باپ کا عاشق تھا اور عاشق ہوں جو ایک اسکالر تھے۔ ایک جینئس تھے اور خاموشی سے علم کے خزانے بانٹا کرتے تھے،بقول احسان دانش وہ ایک اچھے غزل گو شاعر تھے ، لیکن میں نے کبھی اپنے والد
مزید پڑھیے