کراچی (کامرس رپورٹر)پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں جمعرات کواتارچڑھاؤ کے بعد محدودپیمانے پرتیزی غالب رہی تاہم حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم 3کروڑ94لاکھ شیئرز رہا جو سات سال کی کم ترین سطح ہے جب کہ تیزی کے باوجود مجموعی طور پر55.05فیصد حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت میں5ارب33کروڑ روپے سے زائد کی کمی ہوئی۔گزشتہ روز حکومتی مالیاتی اداروں، مقامی بروکریج ہاؤسز سمیت دیگرانسٹی ٹیوشنز کی جانب سے اسٹیل، فوڈز،توانائی،سیمٹ،کیمیکل سمیت دیگرمنافع بخش سیکٹر میں خریداری کے باعث کاروبارکا آغاز مثبت زون میں ہوا جس سے ٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس ای100انڈیکس 33959 پوائنٹس کی بلندسطح پر بھی دیکھاگیاتاہم امریکی ڈالر کے مقابلے میں پاکستانی روپے کی بے قدری کے سبب مقامی سرمایہ کار تذبذب کا شکار نظرآئے اور سرمایہ کاری سے گریزکیاجس کے نتیجے میں دوران ٹریڈنگ کے ایس ای 100انڈیکس 33722پوائنٹس کی سطح پر بھی دیکھا گیابعد میں ریکوری آئی اور کے ایس ای100انڈیکس کی 33800کی سطح ایک بار پھربحال ہوگئی اورمارکیٹ کے اختتام کے ایس ای100انڈیکس35.35پوائنٹس اضافے سے 33875.40پوائنٹس پر بندہوا۔اسی طرح کے ایس ای30انڈیکس62.30پوائنٹس اضافے سے 16010.75پوائنٹس،کے ایم آئی 30 انڈیکس127.71پوائنٹس اضافے سے 53841.59پوائنٹس جبکہ کے ایس ای آل شیئر انڈیکس19.31پوائنٹس کمی سے 24775.91 پوائنٹس پربندہوا ۔ گزشتہ روزمجموعی طور پر 305 کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا،جن میں سے 114 کمپنیوں کے حصص کے بھاؤمیں اضافہ،168کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں کمی جبکہ23کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں استحکام رہا۔