ٹیلی ویژن کے لیجنڈ اداکارعابد علی طویل علالت کے بعد جمعرات کو کراچی میں 67برس کی عمر میں انتقال کر گئے۔ وہ جگر کے عارضے میں مبتلا تھے۔ صدارتی ایوارڈ یافتہ اداکار عابد علی 1952ء میں کوئٹہ میں پیدا ہوئے۔ زمانہ طالب علمی ہی میں وہ ریڈیو پاکستان کا حصہ بن گئے اور بعدازاں 1973ء میں پی ٹی وی کی ڈرامہ سیریل ’’جھوک سیال‘‘ سے اپنی کامیاب فنکارانہ زندگی کا آغاز کیا تاہم ان کو پاکستان کے تاریخ ساز ڈرامے ’’وارث‘‘ سے ملک گیر شہرت حاصل ہوئی جس میں انہوں نے دلاور خان کا کردار ادا کرکے اسے امر بنا دیا۔ انہوں نے سمندر‘ آن‘ پیاس‘ دشت‘ مہندی‘ دوسرا آسمان سمیت درجنوںڈراموں ‘ سیریز اور سیریلز میں کئی لازوال کردار ادا کئے۔ عابد علی رعب دار اور گھمبیر آواز کے مالک تھے‘ انہیں آواز کے زیروبم اور آنکھوں کے تاثرات سے اپنے کردار میں حقیقت کا رنگ بھرنے میں کمال حاصل تھا۔ یہی وجہ ہے کہ وہ بہت جلد پاکستان ٹیلی ویژن کے چند گنے چنے اور صف اول کے اداکاروں میں شامل ہو گئے۔ عابد علی نے متعدد ڈرامے پروڈیوس اور ڈائریکٹ بھی کئے‘ انہوں نے متعدد فلموں میں اداکاری کی۔ خصوصاً فلم خاک اور خون میں ان کے کردار کو بے حد سراہا گیا۔ عابد علی کا انتقال شوبز کے حلقوں کے لئے بڑانقصان ہے فن کی دنیا میںان کا خلا برسوں پورا نہ ہو سکے گا۔ اللہ ان کی بخشش فرمائے اور ان کے ساتھی فنکاروں اور لواحقین کو یہ صدمہ برداشت کرنے کی توفیق دے۔