اسلام آباد (وقائع نگار،مانیٹرنگ ڈیسک) نواز شریف کو سزا سنانے والے جج ارشد ملک نے اپنے بیان حلفی میں میاں ناصر جنجوعہ نامی کردار کا تذکرہ کیا ہے ۔ناصر جنجوعہ ارب پتی کاروباری شخصیت اور سابق وزیر اعظم نواز شریف کے معتمد خاص اور ان کے ساتھ خصوصی طیارے میں سفر کرتے رہے ۔وہ مڈجیک کنسٹرکشن کمپنی کے مالک اور اسلام آباد کی طاقتور کاروباری شخصیت سمجھے جاتے ہیں۔ان کا نواز شریف کے ساتھ پچھلے دو تین سال سے گہرا تعلق رہا اور کئی بار سابق وزیر اعظم کے ساتھ اسلام آباد اور رائیونڈ جا کر خفیہ ملاقاتیں کرتے تھے ۔انکی سوشل میڈیا پر بعض تصاویر بھی سامنے آئی ہیں جن میں انہیں ویڈیو سکینڈل کے دوسرے کردار ناصر بٹ کے ساتھ بھی دیکھا گیا ۔میاں ناصر جنجوعہ کی مڈ جیک کنسٹرکن کمپنی راولپنڈی کے علاقے بینک روڈ کے رہائشی علاقے ہاؤس نمبر 101 میں کاروباری سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہے ، کمپنی کے کئی ذیلی دفتر جیکب آباد، لاہور، مری روڈ بہارہ کہو اور ضلع اٹک کے علاقے ہٹیاں میں ہے ، اسلام آباد میں مڈ جیک کا دفتر پلاٹ نمبر 289 سیکٹر آئی -9 / 3 میں ہے ،ان کا آبائی علاقہ لالہ موسیٰ کے قریب گجرات کی حدود میں ہے ۔ میاں ناصر جنجوعہ کے قومی احتساب بیورو کے سابق چیئرمین قمر الزماں چوہدری کے ساتھ انتہائی قریبی تعلقات ہیں اور حالیہ دور میں مختلف نجی محفلوں اور بین الاقوامی دوروں پر تفریحی مقاصد میں دونوں کو اکٹھا دیکھا گیا ہے ۔ناصر جنجوعہ کے قریبی دوستوں میں نجی سکول سسٹم کے مالک فیصل مشتاق، کاروباری شخصیت ظفر بختاوری، سیف الرحمان، ڈاکٹر رضوان اپل، اسلام آباد میں تعینات رہنے والے سابق ڈپٹی انسپکٹر جنرل وقار چوہان اور شیخ عامر وحید سمیت دیگر شامل ہیں۔ ناصر جنجوعہ نے پاکستان میں قازقستان کے سفارتخانے کے تعاون سے اعزازی قونصلر جنرل کا عہدہ لے رکھا تھا۔مولانا فضل الرحمان کے سابق ترجمان جان اچکزئی بھی ان کے قریبی دوستوں میں شمار ہوتے تھے ۔ دسمبر 2016ء میں میاں ناصر جنجوعہ کے بیٹے کے دعوت ولیمہ میں (ن) لیگ کی اعلیٰ قیادت، ناصر بٹ، چوہدری تنویر، سینیٹر مشاہد اﷲ اور سابق چیئرمین نیب قمر الزماں چوہدری بھی شریک ہوئے ۔