اسلام آباد ( جہانگیر منہاس) مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں پارلیمنٹ ہائوس اور لاجز کی ڈ سپنسری سے 20کروڑ سے زائد کی ادویات ارکان پارلیمنٹ کو فراہم کی گئیں۔ذرائع کے مطابق بیمار ارکان ادویات کے نام پر کاسمیٹک آئٹمز بھی لوکل پرچیز( ایل پی ) کے ذریعے مختلف میڈیکل سٹوروں سے مفت حاصل کرتے رہے ۔ موجودہ حکومت نے سابقہ دور میں لوکل پرچیز کے تحت کڑوروں کی ادویات فراہمی کا ازسرے نو آڈٹ کرانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ پارلیمنٹ ہائوس اور لاجز میں ڈیوٹی دینے والے ڈاکٹروں اور ڈسپنسروں سمیت پیرا میڈیکل سٹاف کے اثاثوں کی چھان بین کا عمل بھی شروع کیا جا رہا ہے ۔ ذرائع نے مزید بتایا بعض خواتین ارکان کو ادویات کے ساتھ کاسمیٹک آئٹمز کی فراہمی بھی کی جاتی رہی جن میں فوڈ سپلیمنٹس بھی شامل تھے ، ان امور کے آڈٹ کیلئے وزارت صحت کے حکام سمیت تحقیقاتی اداروں کی مدد لی جا رہی ہے ۔