نیو یارک(نیٹ نیوز) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ امریکہ افغانستان میں ابتدائی کچھ عرصے کے علاوہ کبھی بھی جیتنے کے لیے نہیں لڑا۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر صدر ٹرمپ نے امریکی اخبار وال سٹریٹ جرنل کو ہدفِ تنقید بنایا اور اخبار کے اداریے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اخبار مجھ سے چاہتا ہے کہ میں افغانستان میں بغیر سوچے سمجھے کام نہ کروں، کوئی اس اخبار کو سمجھائے کہ ہم افغانستان میں 19 برس سے موجود ہیں اور اب وہاں فوجیوں کی تعداد میں کمی ہو رہی ہے ،طالبان امریکی فورسز کا انخلا بھی چاہتے ہیں اور یہ بھی چاہتے ہیں کہ غیر ملکی فورسز افغانستان میں ہی رہیں تاکہ زیادہ سے زیادہ ڈالرز سمیٹے جائیں۔ ٹرمپ نے کہا ہے کہ وہ کورونا وائرس سے محفوظ رہنے کیلئے روزانہ ایک گولی ہائیڈروکسی کلوروکوئن کی خوراک لیتے ہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے ریسٹورنٹ مالکان سے گفتگو میں کیا۔ایک انٹرویو میں سابق امریکی صدر اوبامہ اور نائب صدر جو بائیڈن کو جیل بھیجنے کا مطالبہ کر دیا۔انہوں نے کہا اوباما اور جو بائیڈن ’ہیرو‘ مائیکل فلن کو بے نقاب کرنے میں ملوث تھے ، اگر میں ریپبلکن کی جگہ ڈیموکریٹ ہوتا تو بہت پہلے اس کیس میں ملوث ہر شخص جیل پہنچ چکا ہوتا وہ بھی 50 سال کے لئے ۔