لاہور(جنرل رپورٹر) صوبہ میں بارہ روزہ انسداد خسرہ مہم کو کامیاب بنانے اور گلی محلہ کی سطح تک پہنچ کر چھ ماہ سے سات سال تک کے تمام بچوں کی ویکسینیشن کے لئے محکمہ سوشل ویلفیئر اور غیر سرکاری سماجی تنظیمیں محکمہ صحت پنجاب کے ساتھ مکمل تعاون فراہم کریں گی۔ تمام یونین کونسلز میں این جی اوز کے نمائندے سوشل موبلائزر کے طور پر عوام خصوصاً والدین کو اپنے بچوں کو خسرہ ویکسین کے ٹیکے لگوانے کی ترغیب دیں گے ۔ اس بات کا اعلان آج یہاں ڈائریکٹوریٹ جنرل ہیلتھ سروسز کے دفتر میں محکمہ صحت کے ای پی آئی سیل حکام اور صوبہ بھر سے آئی ہوئی غیرسرکاری سماجی تنظیموں کے نمائندوں کے درمیان مشاورتی اجلاس کے دوران کیا گیا۔ اجلاس میں ایڈیشنل ڈائریکٹر ای پی آئی ڈاکٹر شکیل احمد، ایڈیشنل ڈائریکٹر ڈاکٹرسہیل رانا، یونیسیف کے کنسلٹنٹ عثمان غنی اور دیگر ڈویلپمنٹ پارٹنرز کے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔ اجلاس میں ڈاکٹر شکیل احمد، ڈاکٹر سہیل اور یونیسیف کے کنسلٹنٹ عثمان غنی اور گاوی کی نمائندہ ہما خاور نے این جی اوز کے نمائندوں کو انسداد خسرہ مہم کی تمام تفصیلات سے آگاہ کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ غیر سرکاری سماجی تنظیمیں معاشرے میں موثر اثرورسوخ رکھتی ہیں اور عام آدمی تک صحت کا پیغام پہنچانے میں نمایاں کردار ادا کریں گی۔ انہوں نے کہا کہ تمام اضلاع میں محکمہ صحت، ضلعی انتظامیہ اور محکمہ سماجی بہبود سمیت تمام متعلقہ اداروں میں قریبی رابطہ موجود ہے اور عوامی شعور اجاگر کرنے میں تمام مکتبہ فکر اور طبقات کے نمائندوں کا تعاون حاصل کیا گیا ہے ۔