اسلام آباد(خصوصی نیوز رپورٹر ، مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہاہے کہ اپوزیشن سینٹ کو اپنے تابع رکھنا چاہتی ہے ، چیئر مین سینٹ کیخلاف عدم اعتماد کی تحریک لے آئی ہے ، اس سے پہلے بجٹ میں بھی دیکھ چکی ہے ، ہم اپوزیشن کے اس اقدام میں کسی شخصیت کے ساتھ نہیں ادارے کے ساتھ کھڑے ہیں۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان نے کہا سیاسی اداکاروں نے اداروں کو کمزور کرکے اپنے تابع کیا ، وہ چیئر مین جس کو یہ خود منتخب کرکے لیکر آئے ، اس چیئر مین سینٹ نے کیا ان کی شان میں خلاف وزری کردی کہ آج ان کیخلاف تحریک عدم اعتماد لائی جارہی ہے ؟ چیئر مین سینٹ نے تمام قوانین کی پابندی کی اور نہیں کی تو ظل سبحانی کی خواہشات کی پیروی نہیں کی ۔ اس وقت قوم اس قسم کی محاذ آرائی کی متحمل نہیں ہوسکتی لیکن اب اپوزیشن جب پنجہ آزمائی کرنے کافیصلہ کرچکی ہے اور پہلے بجٹ میں بھی اپوزیشن نے دیکھ لیاہے ، ہم اب ادارے کے ساتھ کھڑے نظر آئیں گے اور سیاسی نادانوں کو باور کرائیں گے کہ ا س طرح اداروں پر لشکر کشی نہیں کی جاتی ۔ اپوزیشن نے چیئر مین سینٹ کیخلاف تحریک عدم اعتماد جمع کرائی ہے اور اس میں بارہویں کھلاڑی بھی شامل ہیں جو پارلیمنٹ سے باہر بیٹھ کر اس کوکمزور کرنا چاہتے ہیں، اس کی مذمت ہونی چاہئے ۔ انہوں نے کہا عمران خان کا دورہ امریکہ پاکستانی پاسپورٹ کی عزت میں اضافہ کرنے جارہاہے ، دورے کی تصدیق ہونے کے بعد اپوزیشن کے ارمانوں پر اوس پڑ گئی ہے ۔ اس سے پہلے بین الاقوامی سطح پر پاکستان کے کسی وزیر اعظم کو یہ عزت نہیں ملی ہوگی، یہ پہلا موقع ہے دنیا پاکستان کی امن کیلئے کی کوششوں کوتسلیم کرنے جارہی ہے ۔ آپ دنیا کویہ باور کرانے جارہے ہیں کہ ہر ایک کو آپ کا علاقے میں ایک اہم کردار تسلیم کرنا ہوگا ۔ پاکستان اس وقت دنیامیں ایک اہم ملک کی حیثیت اختیار کرچکاہے ۔ میں میڈیا سے توقع کرتی ہوں کہ عمران خان کے دورہ امریکہ کو ایک مثبت طریقے سے پیش کیا جائیگا۔نجی یونیورسٹی میں سر سلطان محمد شاہ خان آغا سوئم کی 62 ویں برسی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا عمران خان حقیقی لیڈر کی حیثیت سے آئندہ نسلوں کی بقا، ملکی استحکام، ترقی اور عوامی خوشحالی کیلئے دن رات کام کر رہے ہیں، حقیقی لیڈروں کو ووٹ بینک کی نہیں بلکہ عوام اور ملک کی فکر ہوتی ہے ۔ سیاستدان ہمیشہ آئندہ الیکشن اور اپنے حلقے کے بارے میں سوچتا ہے ۔ پاکستان میں پائیدار ترقی کیلئے ادارہ جاتی اصلاحات ناگزیر ہیں۔ وہ وقت دور نہیں جب ہم اپنے تمام اہداف حاصل کر لیں گے ۔انہوں نے کہا سر سلطان محمد شاہ خان آغا سوئم کی خدمات قابل قدر ہیں، اپنے قومی ورثے کا تحفظ اور اس کی معلومات نئی نسل تک پہنچانا ضروری ہے ۔