لاہور (نامہ نگارخصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے سابق پولیس انسپکٹر عابد باکسر کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے کیخلاف درخواست غیر موثر قرار دے کر نمٹا دی۔ لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس قاسم علی خان نے درخواست کی سماعت کی، عابد باکسر نے اپنی درخواست میں موقف اختیار کیا کہ پولیس کی جانب سے بنائے گئے مقدمات میں بیگناہ ثابت چکا ہوں، اسکے باوجود نام ای سی ایل میں ابھی تک شامل ہے ۔ عابد باکسر کے وکیل نے اعتراض اٹھایا کہ وزارت داخلہ کو نام ای سی ایل سے نکالنے کیلئے درخواست دے رکھی ہے مگر شنوائی نہیں ہو رہی، عدالت وزارت داخلہ کو نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم دے ۔ جسٹس قاسم خان نے ریمارکس دئیے کہ کیا ہوم سیکرٹری اور اٹارنی جنرل کے درمیان کوآرڈینیشن نہیں ہے ، عدالتی حکم پر عابد باکسر کیخلاف کیس میں جواب جمع نہیں کرایا جا رہا، سیکرٹری داخلہ پنجاب نے موقف اپنایا کہ پٹیشن میں فریق نہیں ہوں، پٹیشن میں وفاقی سیکرٹری داخلہ فریق ہیں، عدالت نے ریمارکس دئیے کہ آپ جاسکتے ہیں ضرورت ہوئی تو دوبارہ بلالیں گے ۔ جسٹس قاسم خان نے ڈپٹی اٹارنی جنرل سے استفسار کیا کہ آپ کا کیا نقطہ نظر ہے جس پر انہوں نے عدالت کو آگاہ کیا کہ عابد باکسر اشتہاری ہے ، اس لئے اسکا نام بلیک لسٹ میں شامل کیا گیا،عابد باکسر کا نام ای سی ایل میں شامل نہیں، عدالت نے درخواست غیر موثر قراردیکر نمٹاتے ہوئے درخواست گزار کو نئی درخواست دائر کرنے کی ہدایت کر دی۔