ڈیرہ اسماعیل خان،پشاور (نمائندہ92 نیوز، سٹاف رپورٹر)پولیس چیک پوسٹ پر دہشت گردوں کے حملے اور ہسپتال ایمرجنسی میں خودکش دھماکہ کے واقعات کے دوسرے روز بھی ڈیرہ اسماعیل خان کی فضا سوگوار رہی۔گزشتہ روز2پولیس اہلکاروں اور 5شہریوں کی نماز جنازہ ان کے آبائی علاقوں میں اداکرنے کے بعد تدفین کردی گئی، شہر میں بازار اور تجارتی مراکز تو کھلے رہے تاہم کاروباری سرگرمیاں ماند رہیں۔ڈسٹرکٹ بار ڈیرہ اسماعیل خان کی جانب سے یوم سوگ منایا گیا اور مکمل ہڑتال کی گئی، وکلا برادری نے مرکزی و صوبائی حکومتوں سے شہداو زخمیوں کی فوری امداد اور دہشتگردی میں ملوث عناصر کے قلع قمع کامطالبہ کیا۔ دوسری جانب سی ٹی ڈی پولیس نے کوٹلہ سیداں چیک پر حملے اورٹراما سنٹر پر خودکش دھماکے کے 2مقدمے نامعلوم دہشتگردوں کیخلاف درج کرلئے ہیں۔ادھر ہسپتال ذرائع کے مطابق خود کش دھماکے میں زخمی نوجوان سید زین عباس زیدی کو تشویشناک حالت کے باعث پمز ہسپتال اسلام آباد ریفر کردیا گیا ہے ۔دوسری جانب ریجنل پولیس آفیسر ڈیرہ اسماعیل خان ریجن کیپٹن (ر) فیروز شاہ خان نے غفلت برتنے پر 3تھانوں کے ایس ایچ اوز کی ایک رینک سٹیپ تنزلی اور معطلی کی سزا سناتے ہوئے فوری طور پر لائن حاضر ہونے کے احکامات جاری کردئیے ۔دریں اثناڈیرہ ا سماعیل خان خود کش حملہ آور کے جسم کے اعضا ٹیسٹ کیلئے پشاور منتقل کردیئے گئے ہیں جبکہ نادرا سے بھی اس ضمن میں رابطہ کیا گیا ہے ، ذرائع نے بتایا ہے کہ خودکش حملے کے بارے میں ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ بھی تیار کر لی گئی ہے جو صوبائی اور وفاقی حکومتوں کو ارسال کی گئی ہے ، خود کش حملہ کے بعد گزشتہ روز پشاور کے مختلف علاقوں میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کوالرٹ رکھا گیا تھا ۔