لندن(نیٹ نیوز)لندن برج کے قریب حملہ کرنے والے عثمان خان کا پاکستان سے کوئی تعلق ثابت نہیں ہوسکا اور بھارتی میڈیا کے تمام دعویجھوٹے اور من گھڑت ثابت ہوگئے ،بھارتی میڈیا ہمیشہ کی طرح حقائق کو مسخ کرکے پاکستان پر الزام تراشی کا کوئی بھی موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیتا اور پاکستان کے خلاف جھوٹے اور من گھڑت پروپیگنڈے میں مصروف ہوجاتا ہے تاہم اب اس واقعہ میں پاکستان کو ملوث کرنے کی بھارتی میڈیا کی کوششیں ایک بار پھر ناکام ہوئی ہیں اور اسے منہ کی کھانی پڑی ہے ۔لندن سٹاک ایکسچینج پر حملے کی سازش کیس کی وولوچ کی کراؤن کورٹ میں سماعت کے دوران یہ ثابت ہوچکا تھا عثمان کا پاکستان سے کوئی تعلق نہیں، ملزم برطانیہ میں پیدا ہوااور وہیں پرورش ہوئی، مقدمے میں عثمان خان اور دیگر 8 ملزمان کو سزا ہوئی تھی جن میں سے اکثریت کا تعلق بنگلا دیش سے تھا۔مقدمے کی سماعت کے دوران عدالت میں پیش کیے جانیوالے ثبوتوں کے تحت یہ بات واضح ہوگئی تھی کہ پاکستان سے تعلق رکھنے والا کوئی بھی شخص عثمان خان اور اس کے ساتھیوں کی دہشت گرد منصوبہ بندی میں ملوث نہیں تھا۔رپورٹ کے مطابق عثمان کے والدین آزاد کشمیر سے برطانیہ منتقل ہوئے تھے اور وہ برطانیہ کے شہرسٹاک آن ٹرینٹ میں پیدا ہوا جہاں اس نے پرسیا وا ک نامی علاقے میں پسماندہ حالات پرورش پائی۔عثمان نے چھوٹی عمر میں ہی انتہا پسندوں سے متاثر ہوکر سکول چھوڑ دیا تھا اور المہاجرون نامی تنظیم میں شمولیت اختیار کرلی تھی،وہ القاعدہ کے نظریات سے متاثر تھا۔