لاہور،کراچی،اسلام آباد (نامہ نگار،سٹاف رپورٹر، خصوصی نیوز رپورٹر،این این آئی)حالیہ بجٹ میں ٹیکسز کے نفاذ کیخلاف کل 13جولائی کودی گئی شٹر ڈاؤن ہڑتال کی کال پر تاجر تنظیمیں تقسیم ہو گئیں، ٹریڈرز الائنس نے صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال سے مذاکرات کے بعد ہڑتال موخر کر دی جبکہ آل پاکستان انجمن تاجران نے کہا ہے کہ ہمارے مطالبات وفاق سے متعلقہ ہیں صوبائی وزیر کیسے مطالبات تسلیم کرنے کی یقین دہانی کر اسکتا ہے ،کل کی ہڑتال کا فیصلہ اٹل ہے ۔ قبل ازیں پنجاب حکومت اور تاجر تنظیموں کے درمیان وزیر اعلیٰ پنجاب آفس میں7 گھنٹے طویل مذاکرات ہوئے ۔ تاجر تنظیموں کے رہنماؤں نے صوبائی وزیرصنعت وتجارت میاں اسلم اقبال اور رکن اسمبلی نذیر احمد چوہان کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ حکومت پنجاب نے ہمارے تمام مطالبات مان لئے ہیں لہٰذا اب ہڑتال کا کوئی جواز نہیں۔ اسلم اقبال نے کہا کہ تاجروں کے تمام جائز مطالبات کو مانا گیا ہے اور بعض مسائل کے حل کیلئے وفاقی حکومت سے رابطہ کیا جائیگا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت مخالف تنظیمیں پراپیگنڈہ کر رہی ہیں کہ شناختی کارڈ ہر خریدار سے طلب کیا جائے گاحالانکہ یہ شرط صرف مین ڈیلر زکیلئے ہے ۔ سب ڈیلر ز کیلئے فکسڈ ٹیکس نظام لایا جا رہا ہے جبکہ حکومت چھوٹے دکانداروں پر کوئی ٹیکس نہیں لگا رہی۔ انہوں نے کہا کہ جو لوگ ملز کیساتھ کاروبار کرتے ہیں صرف انہی پر شناختی کارڈ کی شرط لاگو کی جا رہی ہے ۔ کوئی خریدار 50 ہزار روپے مالیت سے کم سامان جتنی بار بھی خرید یگااس سے شناختی کارڈ طلب نہیں کیا جائیگا جبکہ عام دکاندار سے بالکل نہیں پوچھا جا ئیگا۔ جیولرز کیلئے ٹیکس کا علیحدہ نظام ان کی مشاورت سے لائینگے ، ابھی کسی چیز کا ان پر اطلاق نہیں ہوتا۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ ایف بی آر مارکیٹوں میں چھاپے مارے گی نہ ہی کسی کا اکاؤنٹ منجمد کیا جائیگا۔ ٹرانسپورٹرز پر 2سے 4فیصد ٹیکس کے حوالے سے وزیر اعظم سے بات کرینگے ۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ پنجاب حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ 20 کلوآٹے کے تھیلے کی قیمت نہیں بڑھے گی یعنی 20 کلوآٹے کا تھیلہ 770 روپے میں ہی ملے گا۔ پنجاب حکومت آٹے کی سستے داموں فراہمی کیلئے 42 ارب روپے کی سبسڈی دے رہی ہے ۔ دوسری جانب آل پاکستان انجمن تاجران (اشرف بھٹی گروپ )کے مرکزی صدر اشرف بھٹی ،آل پاکستان انجمن تاجران ( نعیم میر گروپ) کے سیکرٹری جنرل نعیم میر نے کہا کہ ہمارے مطالبات وفاق کے ساتھ تھے ، صوبائی وزیر ہمارے مسائل کیسے حل کرسکتا ہے ۔میاں اسلم نے پریس کانفرنس میں ایف بی آر کا کوئی نوٹیفکیشن پیش نہیں کیا، مذاکرات کرنے والے تاجروں کو لولی پاپ دیا گیا۔وزیراعظم پہلے ہی شناختی کارڈ کی شرط ختم نہ کرنے کہہ چکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ 13 جولائی کو ہڑتال کر ینگے ۔ ادھر آل پاکستان ماربل اینڈ گرینائٹ انڈسٹری ایسوسی ایشن کی کال پرآج شاہ جمال چوک اچھرہ میں احتجاج مظاہرہ کیا جا ئیگا۔مرکزی تنظیم تاجران کے رہنما عتیق میر اور کاشف چودھری نے کہا کہ کل ہر صورت ہڑتال کی جائیگی، ہمارے ساتھ 400سے زائد تاجر تنظیموں کے نمائندے ہیں۔ادھر کراچی میں بھی ہڑتال کے معاملے پر تاجر تنظیموں میں پھوٹ پڑ گئی۔کراچی تاجر اتحاد ،سمال ٹریڈرز اینڈ کاٹیج انڈسٹریز اور کراچی الیکٹرانکس ڈیلرز ایسوسی ایشن ہڑتال کے حامی جبکہ سندھ تاجر اتحاد سمیت بعض تاجر تنظیمیں ہڑتال کے مخالف ہیں اس کے علاوہ کئی تاجر تنظیمیں ایسی ہیں جنہوں نے خاموشی سادھ لی ہے ۔ کراچی تاجر ایکشن کمیٹی کو غیر موثر ہونے سے بچانے کیلئے ہنگامی اجلاس طلب کرلیا گیا جس میں متفقہ لائحہ عمل طے کرنے کی کوشش کی جائیگی۔مرکزی انجمن تاجران پاکستان اور ٹریڈر ایکشن کمیٹی اسلام آباد کے صدر اجمل بلوچ کی صدارت میں اسلام آباد کی تمام مارکیٹوں کے عہدیداروں کا اجلاس ہوا۔ جس میں قرار داد کے ذریعے وزیر اعظم عمران خان اور مشیرخزانہ شیخ حفیظ سے مطالبہ کیا گیا کہ ظالمانہ ٹیکس فوری طور پر واپس لیں۔ دوسری قرار داد میں مرکزی انجمن تاجران پاکستان کی اپیل پر اسلام آباد میں کل مکمل ہڑتال کی توثیق کی گئی۔