اسلام آباد (وقائع نگار خصوصی،اے پی پی)صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ بھارتی فاشسٹ قیادت نے خطے کاامن خطرے میں ڈالدیا، عالمی برادری کوکشمیری عوام کی مشکلات کے خاتمے کے لئے کردار ادا کرنا چاہئے ، اقتصادی مفادات پر اخلاقی اصولوں کو قربان نہیں کرنا چاہئے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کو یورپین یونین ملٹری کمیٹی کے چیئرمین جنرل کلاڈیو گرازیانو سے گفتگو کرتے ہوئے کیا جنہوں نے ایوان صدر میں ملاقات کی۔ جنرل کلاڈیونے کہا کہ یورپی یونین کشمیری عوام کے انسانی حقوق کی مکمل حمایت کرتی ہے ۔ صدر مملکت نے کہا کہ یورپی یونین پاکستان کا ایک روایتی اتحادی اور بڑا تجارتی اور سرمایہ کاری شراکت دار ہے ،پاکستان اپنی معیشت کی بہتری کیلئے جی ایس پی پلس سکیم کو ایک تعمیری رابطہ سمجھتا ہے ۔ بعد ازاں ملائیشیا کی مشاورتی کونسل آف اسلامک آرگنائزیشن (ایم اے پی آئی ایم) کے صدر حاجی محمد اعظمی حامد کی سربراہی میں ملاقات کرنے والے آسیان کے ارکان پارلیمان کے 18 رکنی وفد سے گفتگو کرتے ہوئے صدر مملکت نے کہا کہ بھارت کے اقدام نے مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی المیہ پیدا کر دیا ہے ۔ وفد میں انڈونیشیا، ملائیشیا، برونائی دارالسلام، کمبوڈیا اور تھائی لینڈ کی سول سوسائٹی کے ارکان اور ارکان پارلیمان شامل تھے ۔ ایم اے پی آئی ایم کے صدر نے کہا کہ بھارتی اقدامات نہایت قابل مذمت ہیں۔ وفد میں شامل ارکان پارلیمان نے آسیان کشمیر ایڈووکیسی گروپ کے قیام کا اعلان کیا ۔بعدازاں 12ویں کارپوریٹ فلنتھراپی ایوارڈز کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت نے کہا کہ انسانیت اور پسماندہ طبقات کی فلاح و بہبود ہمارا مشترکہ مقصد ہے ، پاکستان کے عوام رفاہی کاموں میں ہمیشہ آگے رہتے ہیں ۔ دریں اثنا صدر مملکت کو یورپی یونین کی نامزد سفیر اندرولا کامینارا اور چیک ریپبلک کے نامزد سفیر ٹامس سمیٹانکا نے سفارتی اسناد پیش کیں۔