لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)تجزیہ کار عامرمتین نے کہا کہ پی ٹی وی کیلئے ایک بورڈ بنایا گیا ہے لیکن اس کے چیئرمین وزیراطلاعات ہیں یہ ٹھیک نہیں کیونکہ کسی ایم ڈی کو یہ جرات نہیں ہوگی کہ وہ وزیر کے سامنے کھڑا ہوسکے ، تحریک انصاف والے ٹاسک فورس پر ٹاسک فورس بنارہے ہیں جس سے لگ رہا ہے کہ ان کی تیاری کوئی نہیں۔92نیوزکے پروگرام’’مقابل‘‘میں گفتگوکرتے ہوئے عامرمتین نے کہا آج انرجی کے اوپر انہوں نے ا یک نئی ٹاسک فورس بنائی ہے ۔ جس کے چیئرمین ندیم بابر کو لگایا گیا ہے جن پرکافی تحفظات ہیں، یہ مشرف کے ایڈوائرز بن کے آئے تھے اوربعد میں انہوں نے اپنی انرجی کمپنی کھول لی تھی۔ انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ بھارت اور پاکستان کے تعلقات بہتر ہوں لیکن بدقسمتی ہے کہ بھارت میں الیکشن آرہاہے اور وہ پاکستان سے تعلقات کسی صورت بہتر نہیں چاہتے ۔تجزیہ کار رئوف کلاسر ا نے کہا کہ جب آئی پی پیز کو پے منٹ ہونے لگی تو اس کے پیچھے ناصر جامی تھے اور اسے ہی آج واٹراینڈپاور کا سیکرٹری لگایاگیا ہے ، ماضی میں ایک روز میں بغیر آڈٹ کے 480 روپے کی ادائیگیاں کی گئی اس کی اس وقت کے آڈیٹر جنرل بلند اختر رانا نے آڈٹ کیا اورا نکوائری کی لیکن اسحاق ڈار نے اس کا آڈٹ مکمل نہیں ہونے دیا۔مجھے امیدہے کہ ندیم بابر نیب کی تین پیشیاں بھگت چکے ہیں وہ پنجاب کمپنی سکینڈل میں شامل رہے ۔وہ شہبازشریف کے بڑے قریب تھے انہیں ایک کمپنی کا سربراہ بنایاگیاتھا ۔ندیم بابر نیب زدہ ہے اگر حکومت نے سربراہ بنانا تھا تو ارشد عباسی کو بنادیتے جن کا اس شعبے میں تجربہ بھی ہے ۔ کیا عشرت حسین ڈی ایم جی کیخلاف کچھ کرینگے کبھی نہیں ہوسکتا۔ جن لوگوں پر ہم نے سیکنڈل فائل کئے انہیں آج مختلف عہدوں پر لگایا جارہاہے ، میرے خیال میں بھارتی ریاست اورملک کے ساتھ سب سے زیادہ کھلواڑ بھارتی میڈیا کھیل رہاہے ۔ میری تجویز ہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ بھارتی صحافیوں کو دعوت پر جی ایچ کیو بلائیں اوران کے سا تھ بیٹھ کر بات چیت کریں جس سے بھی بڑا فرق پڑے گا۔