واشنگٹن( ندیم منظور سلہری سے ) ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت بھارتی افواج کو حکمران جماعت بی جے پی کے زیر اثر لانے کے لیے اقدامات کیے جا رہے ہیں جس کے مستقبل میں بھیانک نتائج برآمد ہو سکتے ہیں، منظر عام پر آنے والی ایک تہلکہ انگیز رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ایسی روش جمہوریت کے لیے خطرناک ثابت ہو سکتی ہے ۔ ہندو انتہا پسند جماعت آر ایس ایس نے بلند شہر میں ویدیک نظریات کے مطابق ایک پرائیویٹ ملٹری کالج قائم کیا ، صوبہ گجرات میں ایک سکیورٹی یونیورسٹی بھی قائم کی گئی ، یہاں سے انتہا پسند جماعت آر ایس ایس کے انتہا پسندوں کو ٹریننگ دیکر باضابطہ فوج میں بھرتی کیا جا رہا ہے ۔ آر ایس ایس کے نظریات کے مطابق مودی حکومت فوج کی تشکیل نو چھ ہزار قبل کے رامائن اور مہابھارت کی جنگوں کے مطابق فوج کو ڈھالنے کی راہ پر گامزن ہیں ۔ آر ایس ایس جماعت 21 ویں صدی میں بھارتی افواج پر اثرانداز ہو رہی ہے وہ چاہتے ہیں کہ چھ ہزار سال قدیم ویدیک جنگی حکمت عملی اختیار کی جائے یہ سازش بھارت کو مختلف ٹکڑوں میں تقسیم ہونے کا باعث بن سکتی ہے ۔