لاہور(جنرل رپورٹر)وزیرصحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشدکا گرینڈ ہیلتھ الائنس کی ہڑتال پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ لاہورکے تمام بڑے سرکاری ہسپتالوں میں مریضوں کاعلاج معالجہ جاری ہے ۔ گزشتہ روزلاہورکے میوہسپتال، جنرل ہسپتال، سروسزہسپتال، گنگارام ہسپتال اورجناح ہسپتال کے اوپی ڈیزمیں مجموعی طورپربیس ہزارسے زائدمریضوں کاعلاج معالجہ ہوا۔ پنجاب کے تمام ٹیچنگ ہسپتالوں کے اوپی ڈیزمیں علاج معالجہ کروانے والے مریضوں کے اعداد وشمار روزانہ کی بنیادپراکٹھے کئے جارہے ہیں۔ ڈاکٹرز سیاست چمکانے کی آڑمیں سرکاری ہسپتالوں میں مریضوں کاحق ماررہے ہیں۔ لگتاہے احتجاجی ڈاکٹرزمولانافضل الرحمن کے دھرنے کی تیاری کررہے ہیں۔ہڑتالی ڈاکٹرزاحتجاج سے پہلے خداراایم ٹی آئی ایکٹ پڑھنے کی جسارت کرلیں۔ صوبہ کے تمام ٹیچنگ ہسپتالوں کے پروفیسرز، ڈاکٹرز، پیرامیڈیکل سٹاف اورنرسزبے بنیادہڑتال کے خلاف متحدہیں۔لاعلم احتجاجی ٹولہ انتظامی اورمالی خودمختاری پرنجکاری کاڈرامہ رچاء کرعوام کوگمراہ کررہے ہیں۔ سرکاری ٹیچنگ ہسپتالوں میں مریضوں کے علاج معالجہ میں کسی قسم کاتعطل نہیں آنے دینگے ۔ احتجاجی ڈاکٹرزکے ساتھ دس ملاقاتوں میں ایم ٹی آئی ایکٹ پر نتیجہ خیزگفتگوہوئی۔ وزیراعلی پنجاب سردارعثمان بزدار نے نئے ڈاکٹرزبھرتی کرنے کی ہدایت کردی ہے ۔ڈاکٹرز کو مریضوں کاعلاج معالجہ روکنازیب نہیں دیتا۔