لاہور(قاضی ندیم اقبال)تعلیمی اداروں میں نارکوٹکس کے استعمال کے بڑھتے رجحان کے تناظر میں چیف سیکرٹری پنجاب نے محکمہ تعلیمات (ہائر ایجوکیشن ) سے تعلیمی اداروں اور ان کے ہاسٹلز میں منشیات کے استعمال کی روک تھام کیلئے اٹھائے گئے اقدامات سے متعلق رپورٹ طلب کر لی ۔معتبر اور مصدقہ ذرائع کے مطابق مختلف حوالوں سے سامنے آنے والی رپورٹس میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ لاہور سمیت صوبہ بھر کے تعلیمی اداروں خاص کرکالجز اور یونیورسٹیو ں کے طلبا و طالبات میں آئس نشے سمیت دیگر اقسام کی نشہ آور اشیاء کے استعمال کا رجحان بڑھ رہا ہے ۔جس کا تدارک ضروری ہے ،ذرائع کے مطابق رپورٹس میں بتایا گیا ہکہ ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے ماضی میں کالجز اور یونیورسٹیوں کے سربراہان کو زیر تعلیم بچوں کو منشیات سے دور رکھنے کی ہدایات جاری کی گئیں، مگر اس پر عمل درآمد کی شرح نہ ہونے کے برابر ہے ۔ذرائع کے مطابق مذکورہ رپورٹس کا چیف سیکرٹری پنجاب یوسف نسیم کھوکھر نے سخت نوٹس لیا ہے اورسیکرٹری ہائر ایجوکیشن کو رپورٹ تیار کر کے آئندہ 24گھنٹے میں جامع بریفنگ دینے کی ہدایت کی ہے ۔ پنجاب میں سرکاری کالجز کی تعداد 780 ہے ۔ 394کالجز بچیوں ، 268کالجز بچوں کے ہیں ، 118کامرس کالجز بھی ہیں جبکہایچ ای سی سے الحاق شدہ، ڈگری جاری کرنے کی حامل سرکاری یونیورسٹیوں کی تعداد اس کے علاوہ ہے ۔