اسلام آباد(خصوصی نیوز رپورٹر) پاکستان نے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس سے مذاکرات کے دوران اپنا کیس بھرپور انداز میں پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان نے منی لانڈرنگ کے خلاف بھرپور اقدامات کئے ۔ وزارت خزانہ نے ایف اے ٹی ایف کے ایشیا پیسفک گروپ (اے پی جی )سے مذاکرات کے بعد اعلامیہ جاری کر دیا۔ اعلامیہ کے مطابق بینکاک میں ایف اے ٹی ایف کا اہم اجلاس ہوا، 15 رکنی پاکستانی وفد کی قیادت وفاقی وزیر حماد اظہر نے کی۔وفد میں سٹیٹ بینک ،ایس ای سی پی کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹرز ،فنانشل مانیٹرنگ یونٹ،نیکٹا کے ڈائریکٹرز بھی شامل تھے ۔ وفاقی وزیر نے مشترکہ گروپ سے 2دن مذاکرات کیے ۔ مذاکرات کے بعد وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ حکومت منی لانڈرنگ کے خلاف متحرک ہے ، پاکستان منی لانڈرنگ کے خلاف عالمی دنیا سے تعاون جاری رکھے گا، تمام مالیاتی جرائم کے خلاف مربوط اقدامات کر رہے ہیں۔انہوںنے کہا ایف اے ٹی ایف پاکستان سے متعلق رپورٹ کا اکتوبر میں جائزہ لے گا، مذکورہ اجلاس 13 سے 18 اکتوبر تک پیرس میں ہو گا ۔ این این آئی کے مطابق پاکستان نے ٹاسک فورس کو جواب جمع کرا دیا ۔حماد اظہر کے مطابق پاکستان نے 4 سے 5 ماہ میں تمام اہداف حاصل کئے ، ایف اے ٹی ایف کا تکنیکی وفد پاکستان کی بریفنگ پر رپورٹ مرتب کرے گا جو آئندہ ماہ ایف اے ٹی ایف کے رکن ممالک کو پیش کی جائیگی۔