اسلام آباد(خبر نگار)سپریم جوڈیشل کونسل میں جسٹس قاضی فائز عیسی کے خلاف ایک اور ریفرنس دائر کردیا گیا۔وحید شہزاد بٹ کی جانب سے دائرریفرنس میں کہا گیا کہ جسٹس قاضی فائز عیسی نے صدر مملکت کو خط میں غلط بیانی کرکے مس کنڈکٹ کا ارتکاب کیا ۔ اس بات میں بھی کوئی شک نہیں کہ جسٹس قاضی فائز عیسی زبان کے سچے نہیں اور اپنے وعدے کا پاس رکھنے والے نہیں۔انہوں نے صدر مملکت کو خط لکھ کر اپنے اختیار سے تجاوز کیا،جسٹس قاضی فائز عیسی نے اپنی پٹیشن میں چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ اور سپریم جوڈیشل کونسل کے ارکان پر الزام لگا کر ججزکے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی اسلئے سپریم جوڈیشل کونسل کی سفارش پر ان کو عہدے سے ہٹایا جانا چاہیئے ۔ریفرنس میں کہا گیا کہ ذاتی موقف پیش کرنے کیلئے عوامی فورم استعمال کرکے جسٹس قاضی فائز عیسی نے ملک بھر کی عدلیہ کی تضحیک کی ۔جسٹس قاضی فائز عیسی نے چیف جسٹس کو نشانہ بنایا جو کہ ملک بھر کی عدلیہ کے سربراہ ہیں،فاضل جج نے سپریم جوڈیشل کونسل اور سپریم کورٹ کے ججزکے حوالے سے نامناسب زبان استعمال کی۔ ریفرنس کی کاپی صدر مملکت اور رجسٹرار سپریم کورٹ کوبھی بھجوائی گئی ہے ۔درخواست گزار نے اپنے پہلے ریفرنس کوخارج کئے جانے کے سپریم جوڈیشل کونسل کے فیصلہ کو بنیاد بنا کر نیا ریفرنس دائر کیاہے ۔