اسلام آباد(خبر نگار خصوصی ، وقائع نگار خصوصی، 92نیوزرپورٹ، نیوزایجنسیاں ) اپوزیشن نے نیشنل پارٹی کے صدر میر حاصل بزنجو کو چیئرمین سینٹ کیلئے متفقہ امیدوار نامزد کردیا۔اس بات کا فیصلہ اسلام آباد میں جمعیت علمائے اسلام (ف) کے رہنما اکرم درانی کی سربراہی میں ہونے والے رہبر کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا،جس میں دیگر اپوزیشن جماعتوں کے رہنما شاہد خاقان عباسی، فرحت اﷲ بابر، نیر بخاری، عثمان کاکڑ، احسن اقبال اور دیگر شریک ہوئے ۔ رہبر کمیٹی کے اجلاس کے بعد مختصر پریس کانفرنس کے دوران رہبر کمیٹی کے کنوینئر اکرم خان درانی نے حاصل بزنجو کو چیئرمین سینٹ کیلئے متفقہ امیدوار نامزد کرنے کا اعلان کیا۔انہوں نے کہا انتہائی یکجہتی اور محبت سے چیئرمین سینٹ کے نام پر اتفاق کیا۔سب اپوزیشن جماعتیں میر حاصل بزنجو کو ووٹ دیں گی، چیئرمین سینٹ کیلئے حاصل بزنجو کا نام سب نے اتفاق رائے سے تجویز کیا ۔ امید ہے ہم میر حاصل بزنجو کو بڑی کامیابی سے چیئرمین سینٹ بنائیں گے ۔کوشش کریں گے دیگر لوگوں کے ووٹ بھی حاصل کریں۔اپوزیشن کی 9 جماعتوں نے میر حاصل بزنجو کو چیئرمین سینٹ نامزد کیا جبکہ پیپلزپارٹی کے سلیم مانڈوی والا ڈپٹی چیئرمین سینٹ رہیں گے اور(ن)لیگ کے راجہ ظفر الحق سینٹ میں اپوزیشن لیڈر کے طور پر کام کرتے رہیں گے ۔ذرائع کے مطابق مسلم لیگ(ن ) کے قائد اور سابق وزیراعظم نوازشریف نے اپنی پارٹی کی طرف سے حاصل بزنجو کو چیئرمین سینٹ کا متفقہ امیدوار نامزد کرنے کی منظوری دی تھی۔عوامی نیشنل پار ٹی کے میاں افتخار حسین نے کہامسلم لیگ (ن) نے اپنے تین ناموں میں میر حاصل بزنجو کا نام دیا۔میر حاصل بزنجو بہترین انتخاب ہیں، مشکلات کا سامنا بھی ڈٹ کر کر سکتے ہیں۔ مسلم لیگ ن کے احسن اقبال نے کہاحکومت کے پاس نمبر پورے نہیں، وہ کامیاب نہیں ہوں گے ۔حکمران سینٹ اجلاس بلانے سے راہ فرار اختیار کر رہے ہیں ۔حکمران اس میں کامیاب نہیں ہوں گے ۔ چودہ روز کے اندر اجلاس بلانا آئینی تقاضا ہے ۔کسی کو جمہوریت اور آئین کیساتھ کھیلنے کی اجازت نہیں دیں گے ۔مسلم لیگ متحد ہو کر چیئرمین سینٹ کیلئے ووٹ دے گی۔ میر حاصل بزنجو نے میڈیا سے گفتگو میں کہا الیکشن میں ہار جیت ہوتی رہتی ہے ، جو اعتماد مجھ پر ہوا ہے میں جیت گیا ہوں۔ اپوزیشن نے مجھ پراعتماد کیا ہے ۔ یہ میرے لیے اعزاز کی بات ہے ۔ اپوزیشن کے اعتماد پر پورا اتروں گا۔ ہم الیکشن لڑنے والے لوگ ہیں، جو گھر ووٹ نہ دے وہاں بھی دستک دیتے ہیں۔ صحافی کی جانب سے سوال کہ گیا کہ کیاوجہ ہے آپ اور صادق سنجرانی ایک صوبے سے ہیں مگر وزیراعظم آپکی مخالفت کررہے ہیں؟ حاصل بزنجو نے کہایہ آپ وزیراعظم سے پوچھیں۔ حاصل بزنجو نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف سے ٹیلیفونک رابطہ کیا۔ حاصل بزنجو نے کہامسلم لیگ ن کی جانب سے نامزد کرنے پر بے حد مشکور ہوں۔تمام اپوزیشن جماعتوں کے اعتماد پر پوار اترونگا۔ شہباز شریف نے کہا حاصل بزنجو کی جمہوریت کیلئے بڑی قربانیاں ہیں۔ حاصل بزنجو نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے ملاقات کی ۔ ملاقات میں خواجہ آصف، احسن اقبال، رانا تنویربھی شریک ہوئے ۔ملاقات میں صادق سنجرانی کیخلاف تحریک عدم اعتماد اور مستقبل کی حکمت عملی پر غور بھی کیا گیا ۔ حاصل بزنجو نے ڈپٹی چیئرمین سینٹ سلیم مانڈوی والا سے بھی ملاقات کی ۔سلیم مانڈوی والا نے حاصل بزنجو کو چیئرمین سینٹ نامزد ہونے پر مبارکباد دی اور کہاحاصل بزنجو تجربہ کار سیاستدان ہیں۔ان کی نامزدگی خوش آئند ہے ۔ اسلام آباد (سپیشل رپورٹر، 92نیوزرپورٹ، نیوزایجنسیاں ) وزیراعظم عمران خان سے چیئرمین سینٹ صادق سنجرانی نے ملاقات کی ہے جس میں اپوزیشن کی تحریک عدم اعتماداور سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم نے چیئرمین سینٹ کو تحریک عدم اعتماد کیخلاف ڈٹ جانے کا مشورہ دیااور مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ ملاقات میں سینیٹراعظم سواتی،پرویز خٹک، شبلی فراز بھی شریک تھے ۔ تینوں رہنماؤں نے وزیراعظم کو سینٹ میں نمبرز گیم سے متعلق بریفنگ دی۔ وزیراعظم نے کہا اپوزیشن کی تحریک عدم اعتماد ناکام بنائیں گے ۔ جمہوریت کا راگ الاپنے والے بتائیں چیئرمین سینٹ کو ہٹانا کون سی جمہوری اقدار ہیں؟ مفاد پرست لوگ جمہوریت تباہ کرنے پر تلے ہیں۔وزیراعظم نے تحریک انصاف کے سینیٹرز کو مختلف جماعتوں سے رابطوں کی ہدایت کی۔