پاکپتن ( ڈسٹرکٹ رپورٹر) حضرت بابا فرید الدین مسعود گنج شکر ؒ کا 777 عرس مبارک آج اختتام پذیر ہو گا جبکہ نماز فجر کی اذان سے پہلے بہشتی دروازے کو ایک سال کیلئے بند کر دیا گیا ۔قبل ازیں بہشتی دروازے کی پانچویں اور آخری روز کی قفل کشائی ڈپٹی کمشنر پاکپتن احمد کمال مان اور ڈی پی او پاکپتن عبادت نثار نے کی ، اس موقع پر ملکی سلامتی ، ترقی ، خوشحالی امن و امان اورمقبوضہ کشمیر کی آزادی کیلئے خصوصی دعا کی گئی۔ آخری روز بھی بہشتی دروازے سے تقریباًایک لاکھ سے زائد زائرین نے گزرنے کی سعادت حاصل کی ۔دیوان مودود مسعود چشتی فاروقی آج 10بجے دربار کو عرق گلاب اورصندل سے غسل دینگے جبکہ دربار کا نور دروزاہ شہدائے کربلا کے سوگ میں چالیس روز کیلئے بند کر دیا جائیگا۔ دیوان مودود مسعود چشتی غسل کے بعد عرس کے اختتام پذیر ہونے کا اعلان کرینگے ۔ دیوان مودود مسعود نے ڈی پی او پاکپتن ، ڈپٹی کمشنر اور ضلعی انتظامیہ کی جانب سے عرس پر انتظامات کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس دفعہ بہتر انتظامات کی وجہ سے کوئی نا گہانی واقعہ پیش نہیں آیا۔دوسری جانب وی آئی پی موومنٹ کے باعث عام زائرین رل کر رہ گئے اور کئی افراد نے اس پر احتجاج بھی کیا۔ ڈی پی او پاکپتن نے بزرگ زائر پر تشدد کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے پولیس فورس کو ہدایت کی کہ زائرین پر تشدد ہر گز بر داشت نہیں کیا جائیگا ، افسر اپنے رویہ پر غور کریں ، زائرین پر تشدد کرنیو الے پولیس اہلکاروں کیخلاف سخت ایکشن لیا جائیگا۔عرس کے موقع پر ریسکیو 1122نے مجموعی طور پر 774 زائرین کو فرسٹ ایڈ مہیا کی۔