اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ،92نیوزرپورٹ، صباح نیوز) مسلم لیگ(ن) کے رہنما خواجہ آصف نے کہا ہے کہ حکومت اب صرف چندہفتوں کی مہمان رہ گئی ، اس کے دن گنے جاچکے ہیں ، حکومت کی دیوار لڑکھڑا رہی صرف آخری دھکے کی ضرورت ہے تاہم حکومت گرانے کیلئے آئینی راستہ ہی اختیار کریں گے ، ہم ڈی چوک نہیں آئے ہوئے ،ہم جلسے کررہے ہیں جوہماراقانونی ،آئینی حق ہے ،اگرہم نے کسی مسئلے کے حتمی نتیجے یاحل پرپہنچناہے تواسٹیبلشمنٹ کوضرورشامل کرناہوگا ۔نجی ٹی وی کے پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ حکومت اپنی نالائقیوں،نااہلیوں کی وجہ سے عوام میں اپنی قدر کھوچکی ہے ، اس نے عوام کو مسائل ،محرومیوں کے سوا کچھ نہیں دیا، عوام اس حکومت سے تنگ ہیں، جلد چھٹکارا چاہتے ہیں، اسحاق ڈارکا مکمل انٹرویو نہیں صرف کلپس دیکھے ہیں ، نواز شریف کے بچے 90 سے ان فلیٹس میں رہ رہے تھے ، شریف فیملی لندن کے فلیٹس چھپانے کی کوشش نہیں کررہی تھی، نواز شریف کے خلاف کرپشن کیس نہیں ملا تو لندن فلیٹس سامنے لے آئے ، حسین نواز کے لندن میں 23 پینٹ ہائوس ہیں، نواز شریف کادفاع کروں گا کسی اور کا دفاع کرنے کیلئے نہیں ، میں قرآن پرحلف دینے کوتیارہوں نوازشریف نے کبھی مجھے کسی کوفیوردینے کو کہانہ فون کیا، موجودہ حکومت میں اتنے سکینڈل آئے ماضی میں نہیں آئے ، حکومت کا سب سے بڑا المیہ معیشت ہے ، مہنگائی کرکے ہر چیز کی قیمت بڑھا دی گئی جو بڑا مسئلہ بن گیا ہے ،الیکشن میں دھاندلی کا ایشو اپنی جگہ قائم ہے ختم نہیں ہوا۔ پیپلزپارٹی اورن لیگ نے پانچ پانچ سال مدت پوری کی لیکن ہمارے بھی وزیراعظم بدلے ،اگرہم ایسی کوئی صورتحال بنالیتے ہیں کہ ان ہائوس کوئی تبدیلی لائی جاسکتی ہے تواس میں کسی کواعتراض نہیں ہوناچاہئے ، ملک میں جلسوں کے نتیجے میں ملٹری یااسٹیبلشمنٹ کی مداخلت ہوجاتی ہے ،قومی اتفاق رائے اس بات پرہوناچاہئے کہ تمام ادارے اپنی آئینی حدودمیں رہناسیکھیں ورنہ یہ ملک توڑپھوڑکاشکارہوجائیگا،ماضی میں کسی نہ کسی موقع پراس حمام میں کسی نہ کسی نے غلطی کی ہے ،میرے خیال میں اسٹیبلشمنٹ نے سب سے زیادہ غلطیاں کی ہیں، فیٹف پرقانون سازی کے وقت اسٹیبلشمنٹ ڈائیلاگ کاحصہ تھی،گلگت الیکشن کے موقع پرآرمی چیف نے میٹنگ لی،اس میں تمام پارٹیاں تھیں،اس میں تمام باتیں زیربحث آئیں،کورونا پر اسٹیبلشمنٹ لیڈلے رہی،ابھی نندن کے معاملے پروزیراعظم نے ہمیں بریفنگ نہیں دی،آرمی چیف نے میٹنگ چیئرکی،اختلافات کی خلیج کوبڑھانے کی بجائے پچھلے 70سالوں میں جوزخم لگائے گئے ، ان پرمرہم رکھیں،اسٹیبلشمنٹ کوبھی راستہ دیناپڑے گا،اس پاورسٹرکچرکے باقی فریقوں کوبھی راستہ دیناپڑے گا،جنہوں نے تجاوزکیا، وہ اپنی حدودمیں واپس چلے جائیں،جو جو متاثر ہوا، اس کی دادرسی کی جائے ،یہی حل ہے ۔لیگی رہنما خواجہ آصف نے مریم نوازکادفاع کرنے سے صاف انکارکردیا،خواجہ آصف’’شریف فیملی کی لندن میں کوئی پراپرٹی نہیں‘‘کے بیانیئے سے بھی پیچھے ہٹ گئے ،نجی ٹی وی کوانٹرویومیں خواجہ آصف نے کہانوازشریف تین دہائیوں سے لندن فلیٹس میں رہائش پذیرہیں،چھپانے کی کیاکوشش ہے اس میں،حسن نوازکے لندن فلیٹس کے حوالے سے سوال پرخواجہ آصف نے کہامیں صرف نوازشریف کادفاع کرونگاکسی اورکانہیں۔