ٹوکیو(ویب ڈیسک) جاپانی خلائی ایجنسی ’’جاکسا‘‘ کا تیار کردہ خودکار خلائی جہاز ’’ہایابوسا2‘‘ اپنے ساڑھے چار سالہ سفر کے بعد ’’162173 ریوگو‘‘ (Ryugu) کہلانے والے شہابیے پر کامیابی سے اتر گیا ہے ۔ اگرچہ اس سے پہلے بھی چند شہابیوں تک خودکار خلائی جہاز پہنچ چکے ہیں لیکن ہایابوسا2 اس لحاظ سے منفرد ہے کہ اس نے ’’ریوگو‘‘ پر اتر کر وہاں کی کھدائی (ڈرلنگ) کی ہے اور شہابیے کی سطح کے اندر سے مٹی کے نمونے جمع کیے ہیں۔اس طرح یہ انسانی تاریخ میں وہ پہلا موقعہ ہے کہ جب زمین سے بھیجی گئی کسی خودکار مشین نے دوسرے شہابیے پر کھدائی (ڈرلنگ) کا عمل انجام دیا ہے اور نمونے جمع کیے ہیں۔ اس سے پہلے یہ کامیابی صرف مریخ کے ضمن ہی میں حاصل کی جاسکی تھی۔واضح رہے کہ ریوگو شابیے (ایسٹیرائیڈ) کا مدار زمین اور مریخ کے درمیان واقع ہے ۔ اس شہابیے پر اترنے کے لیے جاپانی خلائی ایجنسی ’’جاکسا‘‘ نے ہایابوسا2 مشن کو دسمبر 2014 میں روانہ کیا تھا۔ یہ گزشتہ برس کے اختتام تک ریوگو تک پہنچ چکا تھا اور اسی کے ساتھ ساتھ مدار میں گردش کررہا تھا۔ ہایابوسا2 لینڈر کو پہلی بار فروری 2019 میں آزمائشی طور پر تھوڑی سی دیر کے لیے ریوگو پر اتارا گیا اور یہ سطح سے کچھ نمونے جمع کرنے کے فوراً بعد اپنے مدار میں واپس پہنچا دیا گیا۔ہایابوسا2 کی دوسری اور اصل لینڈنگ آج یعنی 11 جولائی 2019 کے روز، جاپانی وقت کے مطابق صبح تقریباً دس بجے شروع ہوئی جو نہایت آہستگی اور احتیاط کے ساتھ تقریباً پچاس منٹ میں مکمل ہوئی۔