چناری(آن لائن)جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ کا مقبوضہ کشمیر میں جاری کر فیو اور بھارتی ظلم و ستم کے خلاف چناری اور لائن آف کنٹرول چکوٹھی کے درمیان (چنوئیاں، بھرائیاں ) کے مقام پر دھرنا چوتھے روز بھی جاری رہا ، شرکاء دھرنا سے اظہار یکجہتی کے لیے سابق امیر جماعت اسلامی عبدالرشید ترابی،وزیر حکومت نورین عارف، جموں کشمیر لبریشن فرنٹ(ص) کے سربراہ سردار صغیر خان ایڈوکیٹ سمیت متعدد اہم شخصیات دھرنا میں پہنچ گئیں ، دھرنا میں نئے قافلوں کی آمد کا سلسلہ بھی جاری ہے ، بھارتی چوکیوں کے سامنے بھارت مخالف اور آزادی کے حق میں زبردست نعرے بازی کی گئی۔تفصیلات کے مطابق ریسٹ ہائوس چناری میں وزیر اطلاعات آزاد کشمیر مشتاق منہاس ،وزیر تعلیم کالجز کرنل(ر) وقار نو ر،جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ کے صدر ڈاکٹر توقیر گیلانی اور ترجمان رفیق ڈار کے درمیان ہونے والے مذاکرات ایک بار پھر ناکام ہو گئے ۔ ڈاکٹر توقیر گیلانی نے آج صبح دس بجے پریس کانفرنس میں آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کر دیا ۔ شرکاء دھرنا دریا جہلم کے کنارے سخت سردی میں بھی شاہراہ سرینگر پر دھرنا دے کر بیٹھے رہے ، متحدہ جہاد کونسل کے سربراہ صلاح الدین نے شرکاء دھرنا سے ٹیلی فونک خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ وقت دور نہیں جب کشمیر آزاد ہو کر رہے گا۔ڈاکٹر توقیر گیلانی نے کہا کہ حکومت فوری طور پر ہمیں مظلوم بھائیوں کی مدد کیلئے سرینگر جانے دے ۔ دریں اثناء ڈپٹی کمشنر ہٹیاں بالا کی ناقص پالیسیوں کے باعث چناری اور گردونواح میں بعض تعلیمی ادارے بند رہے ۔