اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،این این آئی)صدر ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ بھارت اسوقت آگ سے کھیل رہا ہے جو اسکے سیکولرزم کو جلا کر راکھ کردے گی۔غیرملکی ٹی وی کوانٹرویومیں صدرمملکت کا کہنا تھا کہ اگر بھارتی حکومت کو ایسا لگتا ہے کہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کر کے وہاں لوگوں کی زندگی کو بہتر بنائے گی تو وہ احمقوں کی جنت میں رہتی ہے ۔اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس سے متعلق صدر مملکت نے کہا کہ اس حوالے سے بہت زیادہ بیک ڈور بات چیت ہوئی اور سب سے بڑھ کر یہ کہ کافی عرصے بعد مسئلہ کشمیر بین الاقوامی مسئلہ بن گیا۔ان کا کہنا تھاکہ بھارت نے سلامتی کونسل کی متعدد قراردادوں کو نظر انداز کیا اور پاکستان کے ساتھ مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کیلئے بات کرنے سے انکار کیا۔عارف علوی کا کہنا تھا کہ یہ کب تک جاری رہے گا؟ پاکستان اور بھارت کے درمیان شملہ معاہدے کو کافی وقت گزر چکا ۔انہوں نے سوال اٹھایا کہ کیا دنیاخاموش رہ سکتی ہے اور دونوں فریقین پر بات چیت کرنے پر زور دے سکتی ہے جبکہ ان میں سے ایک فریق بات کرنے کیلئے ہی تیار نہیں ۔صدر مملکت کا کہنا تھا کہ میرے خیال سے غالبانہ سوچ کے ذریعے کشمیر کو نگلنے کا ارادہ ہے لیکن یہ کبھی نہیں ہوگا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان معاملے کو بین الاقوامی سطح پر اٹھانے کا سلسلہ جاری رکھے گا تاہم مقبوضہ کشمیر سے کرفیو اٹھنے کے بعد وہاں کے عوام بھی اپنے ارادے بتائیں گے ۔وزیر اعظم عمران خان کا انتباہ دہراتے ہوئے صدر علوی کا کہنا تھا کہ ایسا ممکن ہے کہ بھارت پلوامہ حملے جیسی جھوٹی کارروائی کروائے جسے جواز بنا کر وہ پاکستان پر حملہ کر سکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان جنگ کا آغاز نہیں چاہتاتاہم اگر جنگ مسلط کی گئی تو ہم دفاع کا حق رکھتے ہیں۔دریں اثناصدر ڈاکٹر عارف علوی نے ٹویٹر پر مقبوضہ کشمیرکی صورتحال کی ویڈیو ٹویٹ کی ۔ ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ پابندیوں، بلیک آؤٹ، فائرنگ اور آنسو گیس کے باوجود یہ سرینگر ہے ۔صدر نے کہا کہ ظلم وسفاکی مقبوضہ کشمیرکے بھارت کیخلاف جذبات دبا نہیں سکتے ، کشمیری ہرقیمت پرآزادی چاہتے ہیں۔