اسلام آباد (92 نیوزرپورٹ،این این آئی) آئی ایم ایف نے پاکستان میں 2022ء میں بھی مہنگائی بڑھنے کے خطرے کی گھنٹی بجادی،آئی ایم ایف نے عالمی معاشی آؤٹ لُک جاری کردی جس کے مطابق رواں مالی سال پاکستان کی معاشی گروتھ 4 فیصد رہنے کی پیش گوئی کی گئی ہے ، گزشتہ مالی سال پاکستان کی معاشی گروتھ 3.9 فیصد رہی تھی۔رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال کے دوران پاکستان میں مہنگائی کی شرح 8.5 فیصد رہنے کی پیش گوئی کی گئی ہے ۔ رپورٹ میں کہاگیا ہے کہ رواں مالی سال کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ جی ڈی پی کا 3.1 فیصد رہ سکتا ہے ،گزشتہ مالی سال کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ جی ڈی پی کا 0.6 فیصد تھا۔رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال پاکستان میں بیروزگاری کی شرح میں کمی کا امکان ہے ، پاکستان میں بے روزگاری کی شرح 4.8 فیصد تک رہنے کی پیش گوئی کی گئی ہے ۔ گزشتہ سال بیروزگاری کی شرح 5 فیصد ریکارڈ کی گئی۔ دوسری جانب وزیر خزانہ شوکت ترین امریکہ روانہ ہوگئے ،آئی ایم ایف، ورلڈ بینک کے سالانہ اجلاس میں شرکت کریں گے ۔ ذرائع کے مطابق وزیر خزانہ آئی ایم ایف کے ساتھ پالیسی سطح کے مذاکرات میں بھی شریک ہونگے ،پاکستان اور آئی ایم ایف کے پالیسی مذاکرات 13 سے 15 اکتوبر تک جاری رہیں گے ،مذاکرات کی کامیابی کی صورت میں 1 ارب ڈالر کی اگلی قسط ملنے کا امکان ہے ۔