لاہور ( فورم رپورٹ: رانا عظیم، فاروق جوہری) ن لیگ کبھی بھی سیاسی طور پر اپوزیشن پارٹی نہیں رہی یہ صرف حکومتی سیاست کر سکتی ہے اس لئے شہباز شریف یا نوازشریف کے ہونے نہ ہونے سے فرق نہیں پڑتا۔ کوئی بھی سیاسی جماعت ہمیشہ پارٹی بیانیہ پر چلتی ہے اور ن لیگ میں نوازشریف اور شہباز شریف کا بیانیہ موجود ہے ۔ شہباز شریف اور نوازشریف کی غیر موجودگی میں ن لیگ اسمبلی میں تو اچھی اپوزیشن کا کردار ادا کر سکتی ہے لیکن عوام کے اندر بحیثیت اپوزیشن پارٹی بالکل صفر ہے ۔ ان خیالات کا اظہار مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے روزنامہ92 نیوز فورم سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ن لیگ کے رہنما سینیٹر راجہ ظفر الحق نے کہا کہ یہ کہنا غلط ہے کہ نوازشریف کے بعد اب شہباز شریف بھی ملک سے باہر ہیں اور ن لیگ اب اپوزیشن کا کردار ادا نہیں کر سکے گی، اب تو فوری رابطے ہو جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی پارٹی ہمیشہ اپنے لیڈر کے بیانیہ کے مطابق چلتی ہے اور ن لیگ میں نوازشریف اور شہباز شریف کے بیانیے موجود ہیں۔ تحریک انصاف کے رہنما نذر گوندل نے کہا کہ نوازشریف اور شہباز شریف کی موجودگی میں ن لیگ عوامی سیاست نہیں کر سکی تو ان کی غیر موجودگی میں کیسے عوامی سیاست کرے گی۔ انہوں نے کہا ن لیگ کبھی عوامی طور پر سیاست نہیں کر سکی ۔ اس وقت بھی ن لیگ صرف اسمبلی کے اندر ہی موثر اپوزیشن کا رول ادا کرے گی۔جماعت اسلامی کے رہنما امیر العظیم نے کہا کہ ن لیگ نے کبھی شہباز شریف اور نوازشریف کی موجودگی میں اپوزیشن کا رول ادا نہیں کیا تھا تو اب ان کی غیر موجودگی میں وہ کیسے کر سکتے ہیں ۔ ن لیگ میں اس وقت سب چودھری اور افسر لوگ سیاست کر رہے ہیں اور ایسے لوگ کبھی عوامی سیاست نہیں کر سکتے ۔ اس لئے نوازشریف اور شہباز شریف کا ہونا یا نہ ہونا ایک برابر ہے ۔