لاہور ( نیوز رپورٹر ) وفاقی وزیر ریلوے اعظم خان سواتی کاکہناہے کہ گھوٹکی حادثہ تاریخ کاالمناک واقعہ ہے خطرناک ٹریک کو حادثات سے محفوظ کرنے کے لئے وزیر اعظم سے 60 ارب مانگیں گے ،گھوٹکی ٹرین حادثے کی تحقیقات تین سے چار ہفتوں میں مکمل کریں گے جس کے لئے آرمی اور دیگر تحقیقاتی اداروں کے افسران کی بھی مدد لی جائے گی، اگرمیرے استعفی سے کوئی بہتری ہوگی تو بسم اللہ کریں ۔ جو افسر اپنا کام ذمہ داری سے نہیںکرے گا اس کو ایسی پھکی دی جائے گی کہ وہ یاد کرے گا ، احتساب بڑوں کو سزا دینے سے شروع ہوتاہے حادثے کے ذمہ داروں کو کیفر کردار تک ضرور پہنچائیں گے ،حادثہ کی اصل وجہ ٹریک اور کوچز کی خرابی ہے ، سرسید ایکسپریس کے ڈرائیور کو بریک لگانے کا موقع نہیں مل سکاٹریک ستر سال پرانا ضرور ہے مگر عوامی مفاد میں ٹرینیں بند نہیں کر سکتے ،ریلوے کو فوری طورپر ٹریک کو ٹھیک کرنے کے لئے 60 ارب روپے چاہئے تاکہ ہم ٹریک کو ایم ایل ون کے ڈیزائن کے مطابق بنا سکیں اور انسانی جانوں کے ضیاع کو بچایا جاسکے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روزریلوے ہیڈ کواٹر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اعظم سواتی نے کہا گھوٹکی ٹرین حادثے میں 63 افرادجاں بحق ہوئے ، تمام کی شناخت ہوگئی ہے ،20 زخمی جو ابھی زیرعلاج ہیں ۔ اتوار یا پیر کو وزیراعظم سے ملاقات کروں گا اور جو معذور ہوچکے ہیں ان کی احساس پروگرام کے تحت مدد کریں گے جبکہ جاں بحق ہونے والے افراد کی لواحقین کو 15 لاکھ فی کس اور 50 ہزارسے 3 لاکھ زخمیوں کو دیئے جائیں گے ۔ 2014ء سے آج تک ریلوے پر کوئی خرچہ نہیں ہوا ، ڈی ایس سکھر ہمارا اچھا افسر ہے ۔ لاہور (نیوز رپورٹر ) وفاقی وزیر ریلوے اعظم خان سواتی نے ڈہرکی کے قریب ملت ایکسپریس اور سر سید ایکسپریس ٹرین حادثے پر ایکشن لیتے ہوئے 6 جبکہ خیبر میل کی بوگیاں پٹڑی سے اترنے پر 3افسروں کو معطل کر دیا ۔تفصیلات کے مطابق ٹرین حادثے کی ابتدائی رپورٹ آنے پر گریڈ18 کے محمد عمران (DME-II) لاہور ، گریڈ 18 کے غلام قادر لاکھو (DEN-II) سکھر،گریڈ 16 کے قاضی شمس الدین پی ڈبلیو آئی / گریڈ ٹو میرپور متھیلو،گریڈ 17کے راشد علی مہیسر اے ٹی او /اے سی او سکھر،گریڈ 17کے عبدالعزیز اے ایم ای/ سکھر،گریڈ 11 کے ابتسام الحسن سب انجینئر گریڈ ون / ٹی ایکس آر کراچی کو معطل کیا گیاجبکہ کراچی ڈویژن میں حیدرآباد کے قریب خیبر میل کے پٹڑی سے اترنے پر فرائض میں غفلت برتنے پر گریڈ 19 کے شوکت علی شیخ ڈپٹی ڈی ایس / سول کراچی،گریڈ 18 کے مجیب الرحمن ڈی ای این ٹو کراچی، گریڈ 16 کے مسرور انور پی ڈبلیو آئی حیدرآباد کو معطل کیا گیا۔ریلوے حکام نے نوٹیفکیشن جاری کر دیا ۔