اسلام آباد(نیٹ نیوز، مانیٹر نگ ڈیسک )پاکستان نے زرمبادلہ کے کم ہوتے ذخائر کے پیش نظر سعودی عرب کے اسلامک ڈویلپمنٹ بینک سے 4 ارب ڈالر کا قرض مانگ لیا، سعودی بینک نے قرض دینے پر رضامندی ظاہر کر دی ہے تاہم نئی حکومت کا انتظار کیا جا رہا ہے ۔برطانوی اخبار فنانشل ٹائمز نے اپنی رپورٹ میں پاکستانی حکام کے حوالے سے بتایا کہ سعودی بینک نے قرض دینے پر رضامندی ظاہر کر دی ہے اور اس سلسلے میں عمران خان کی زیر قیادت نئی حکومت بننے کا انتظار کیا جا رہا ہے ،پیپر ورک بھی مکمل کر لیا گیا ہے ۔قرض دینے کے پیچھے سعودی حکومت ہے جو معاشی بحران سے نکلنے کیلئے پاکستان کی مدد کرنا چاہتی ہے ۔سعودی بینک کے ترجمان نے بتایا کہ زیر غور تھی جسے منظور کر لیا گیا۔فنانشل ٹائمز کے مطابق پاکستانی حکام نے بتایا کہ نئی حکومت میں اسد عمر متوقع وزیر خزانہ ہو سکتے ہیں،اسلامک بینک قرض دینے کی منظوری کیلئے نئی حکومت کے چارج سنبھالنے کا منتظر ہے ۔قبل ازیں پی ٹی آئی رہنما اسد عمر نے کم ہوتے زرمبادلہ کے ذخائر پر بات کرتے ہوئے آئی ایم ایف سے قرض لینے کی بات کی تھی۔دوسری جانب وزارت خزانہ نے قرض سے متعلق بات چیت سے گریز کیا ۔وزارت خزانہ کے مطابق بیرونی ادائیگیوں کے مختلف آپشن زیر غور ہیں لہٰذا اس پر فوری کوئی رد عمل نہیں دے سکتے ۔